ایران میں پیٹروکیمیکل مصنوعات کی پیداوار میں 38 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا

تہران، ارنا- ایرانی پارلیمانی انرجی کے ترجمان نے کہا ہے کہ ملک میں گزشتہ سال کے مقابلے میں پیٹروکیمیکل مصنوعات کی پیداوار میں 38 فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور پیٹرو کیمیکل انڈسٹری میں جاری منصوبوں کی وجے سے یہ بڑھتا ہوا رجحان جاری رہنے کی توقع ہے۔

پورٹ کے مطابق ملک میں پیٹرو کیمیکل کی پیداواری صلاحیت 90 ملین ٹن سالانہ ہے جس میں 2020 کے مقابلے میں 38 فیص کا اضافہ ہوا ہے جو 65 ملین ٹن تھا۔

ایرانی پارلیمانی انرجی کے ترجمان "مصطفی نخعی" نے ملک کی پیٹرو کیمیکل صنعت میں خاص طور پر پابندیوں کے مشکل دنوں میں زرمبالہ کے ذخائر میں اضافے کا نوٹ کرتے ہوئے کہا مکران، قشم اور جاسک میں اس صنعت کے نئے روزگار کی تعریف کی گئی ہے اور اس صنعت میں ایک بہتر مستقبل کا وعدہ کیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس کے لیے بہت اچھے منصوبوں کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پیٹرو کیمیکل جو اپ اسٹریم فیڈ جیسے گیس کنڈینسیٹ اور قدرتی گیس کا استعمال کرتے ہیں ان پیٹرو کیمیکلز کے مقابلے میں کم اضافی قیمت ہوتی ہے جو انٹرفیشل فیڈ استعمال کرتے ہیں۔

نخعی نے کہا کہ ملک میں اس شعبے میں کیٹلسٹ اور آلات کو اندرونی بنانے میں اچھی تحقیقی کامیابیاں اور مناسب اقدامات کیے گئے ہیں، جو کہ پیٹروکیمیکلز کی اچھی کامیابیوں میں سے ایک ہے۔

گیارہویں پارلیمنٹ کے انرجی کمیشن کے ترجمان نے قدرتی گیس فیڈ کے مسئلے کو پیٹرو کیمیکل انڈسٹری کے موجودہ اور مستقبل کے اہم چیلنجوں میں سے ایک سمجھا اور کہا فیڈ کے طور پر قدرتی گیس کی بڑھتی ہوئی طلب، ملک میں قدرتی گیس کی پیداوار کے منفی توازن کو مدنظر رکھتے ہوئے  اس صنعت کے سنگین چیلنجوں میں سے ایک ہو سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ پیشین گوئی کی جاتی ہے کہ اگلے چند سالوں میں پیٹرو کیمیکل صنعت کو درکار فیڈ تقریباً 170 ملین کیوبک میٹر یومیہ ہوگی؛ کیونکہ قدرتی گیس پیٹرو کیمیکل انڈسٹری کھانے اور ایندھن دونوں کے طور پر استعمال کرتی ہے اور پیٹرو کیمیکل انڈسٹری میں قدرتی گیس کی یہی ضرورت ہے۔

9467**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha