ایران میں سیریک پاور پلانٹ کا ایگزیکٹو آپریشن صدر روحانی کی ہدایت سے آغاز کیا گیا

بندرعباس، ارنا- ایران جنوبی علاقے میں واقع 1400 میگاواٹ کے سیریک پاور پلانٹ کا ایگزیکٹو آپریشن، وزیر توانائی، صوبے ہرمزگان کے گورنر جنرل اور روس کی وزارت توانائی کے نمائندے کی موجودگی اور صدر روحانی کی ہدایت سے آغاز کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق، ایرانی وزیر توانائی نے آج بروز جمعرات کو 1400 میگاواٹ کے سیریک پاروپلانٹ کا ایگریکٹو آپریشن کی تقریب میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیریک پاور پلانٹ کا چار 350 میگاواٹ ہیٹر یونٹ سمیت 1400 میگاواٹ پاور پلانٹ کی کل درجہ بندی شدہ آؤٹ پٹ پاور جس کی مجموعی کارکردگی 46 فیصد ہے و نیز ایک سپر کریٹیکل بوائلر مرکزی گیس ایندھن کا پاورپلانٹ ہے۔

اردکانیان نے کہا کہ اس پاور پلانٹ کی تقریبا 200 ایکڑ کے رقبے پر پھیلے ہوئے اراضی پر تعمیر کی جاتی ہے جس پر مجموعی طور پر 406 ملین یورو کی سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کی مدت آج سے 55 ماہ ہے؛ لیکن ہم ایگزیکٹو پلان سے آگے ہیں، اور ورکشاپ کے سامان اور ایگزیکٹو آپریشن کا ایک حصہ اور 300 ہزار مکعب میٹر کھدائی کی جاچکی ہے۔

اردکانیان نے مزید کہا کہ ہم نے کہا تھا کہ اس حکومت میں 57 ڈیم بنائیں گے جن کا 56 ویں ڈیم آج نفاذ ہوجائے گا اور ہمیں امید ہے کہ حکومت کے خاتمہ تک 58 ڈیم کھولے جاسکتے ہیں۔

وزیر توانایی نے کہا کہ اوسطا اس حکومت میں، ملک کے سرحدی علاقوں میں ہر پچاس دن میں ایک ڈیم کا نفاذ کیا گیا  جبکہ اسلامی انقلاب سے پہلے  ارس نامی صرف ایک ہی سرحدی ڈیم بنایا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی انقلاب کے بعد ملک میں 56 سرحدی ڈیموں کا نفاذ کیا گیا جن کے آدھے کو تدبیر اور امید کی حکومت میں بنائے گئے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha