خطے کی فلاح و بہبود کیلئے تہران اور اسلام آباد کا مشترکہ موقف ہے :پاکستانی سینیٹ کے سربراہ

اسلام آباد، ارنا - پاکستانی سینیٹ کے سربراہ نے علاقائی اور بین الاقوامی فورمز میں تہران اور اسلام آباد کے مابین باہمی تعاون کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک بہت سارے علاقائی امور اور علاقائی فلاح و بہبود میں یکساں موقف رکھتے ہیں۔

جمعہ کے روز پاکستان میں اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر'سید محمد علی حسینی' اور پاکستانی سینیٹ کے سربراہ ' محمد  علی سنجرانی کے درمیان ملاقات ہوئی۔

سنجرانی نے اس ملاقات میں دونوں ہمسایہ ممالک کے مابین پارلیمانی ، اقتصادی اور تجارتی تعاون کو گہرا بنانے پر زور دیا۔

یہ ملاقات پاکستانی سینیٹ کے اسپیکر کے آئندہ دورہ ایران کے موقع پر ہوئی جس موضوع کو سنجرانی نے اہم سمجھا اور اس بات پر زور دیا کہ ان کا آئندہ دورہ تہران دونوں ممالک کے مابین دوستانہ تعلقات کو مستحکم کرنے کی سمت میں ایک بڑا قدم ہے۔

خطے کی فلاح و بہبود کیلئے تہران اور اسلام آباد کا مشترکہ موقف ہے :پاکستانی سینیٹ کے سربراہ

سدیگ سنجرانی تہران میں ہمارے صدر منتخب ہونے والے صدر اور وزیر اعظم پاکستان کی جانب سے افتتاحی تقریب میں شرکت کرنے والے ہیں۔ پاکستانی پارلیمنٹیرینز کا وفد سینیٹ کے اسپیکر کے ہمراہ ہوگا۔

صادق سنجرانی ایک پارلیمانی وفد کے ہمراہ آئندہ ہفتے میں ایرانی نئے صدر کی حلف برداری تقریب کی شرکت کیلیے ایران کا دورہ کریں گے۔

سنجرانی نے کہا کہ تہران اور اسلام آباد خطے میں امن و استحکام کی بحالی اور خطے کی اقوام کیلیے سماجی اور معاشرتی بہبود کے خواب کو پورا کرنے کے لئے پرعزم ہیں۔

انہوںنے کہا کہ ایران اور پاکستان کی تاریخی، مذہبی ، ثقافتی اور جغرافیائی مشترکات تعلقات اور جامع تعاون کو وسعت دینے کے لیے ایک بڑی صلاحیت اور موقع ہیں۔

انہوں نے علاقائی اور بین الاقوامی فورموں میں ایران اور پاکستان کے تعاون کو سراہتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد تہران کے ساتھ اپنے تاریخی تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے اور ہم سیاسی ، پارلیمانی ، ثقافتی اور اقتصادی سمیت مختلف شعبوں میں باہمی تعاون کو بڑھانے کے لئے پرعزم ہیں۔

ایرانی سفیر نے پاکستانی سینیٹ کے سربراہ کے بیانات اور مواقف کی تعریف کرتے دو دوست اور ہمسایہ ممالک کے مابین تعلقات اور تعاون کو مزید مستحکم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

اس ملاقات میں ایران سے پاکستان کے مختلف علاقوں  بشمول بلوچستان کو بجلی کی منتقلی کے شعبے میں دونوں ممالک کے درمیان تعاون سے متعلق تازہ ترین پیشرفتوں کا جائزہ لیا گیا۔

پاکستانی عہدیدار نے گوادر کی بندرگاہ کی ترقی اور صوبہ بلوچستان کے خطے مکران خ تک بجلی کی ترسیل کے منصوبے کے لئے حکومت اسلامی جمہوریہ ایران کی حمایت کو بھی سراہا۔

 اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha