اگر عملی طور پر تمام پابندیوں کو خاتمہ کریں تو جوہری معاہدے کے وعدوں پر واپس آئيں گے: آیت اللہ خامنہ ای

تہران، ارنا – قائد اسلامی انقلاب نے فرمایا ہے کہ اگر دوسرے چاہتے ہیں کہ ایران جوہری معاہدے میں اپنی ذمہ داریوں پر واپس آجائے تو امریکہ کو عملی طور پر ہر قسم کی پابندیوں کو خاتمہ کرنا چاہیئے، یہ ہماری پالیسی ہے اور ملکی عہدیداروں کا بھی اتفاق رائے ہے۔

ان خیالات کا اظہار حضرت آیت اللہ العظمی "سید علی خامنہ ای" نے اتوار کے روز آرمی ایئر فورس کے کمانڈرز کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران خطاب کرتے ہوئے کیا۔
انہوں نے فرمایا کہ اگردوسرے چاہتے ہیں کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنے جوہری وعدوں پر واپس آجائے تو ، امریکہ کو پابندیوں کو عملی طور پر مکمل طور پر ختم کرنا چاہئے اور پھر ہم تصدیق کریں گے اور دیکھیں گے کہ پابندیاں ٹھیک طرح سے ختم کردی گئی ہیں ، پھر ہم اپنے وعدوں پر واپس آجائیں گے۔ یہ ہماری یقینی پالیسی ہے اور ملکی عہدیداروں کا بھی اتفاق رائے ہے۔
آیت اللہ خامنہ ای نے فرمایا کہ پابندیوں کے حوالے سے سب سے پہلے تو اسلامی جمہوریہ ایران کسی کو بھی غیر ذمہ دار لوگوں کا قرض نہیں ، چاہے وہ یورپ میں ہو یا امریکہ میں۔ دوسری بات ، اگر ہم منطقی طور پر بات کرنا چاہتے ہیں تو ، جوہری معاہدے کی تمام ذمہ داریوں کی خلاف ورزی کرنے والے امریکہ اور تین یورپی ممالک کو شرائط طے کرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ انہوں نے اپنی کوئی ذمہ داری پوری نہیں کی۔
ایرانی سپریم لیڈر نے فرمایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کو شرط رکھنی کا حق ہے کیونکہ ہم نے اپنی تمام ذمہ داریوں کو پورا کیا، ہمارے پاس حق ہے کہ جوہری معاہدے کے تسلسل کے لئے کوئی شرط بنائیں اور ہم نے یہ شرط بناتے ہوئے کہا کہ اور کوئی بھی اس سے انحراف نہیں کرے گا۔
رہبر معظم نے فرمایا کہ اگردوسرے چاہتے ہیں کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنے جوہری وعدوں پر واپس آجائے تو ، امریکہ کو پابندیوں کو عملی طور پر مکمل طور پر ختم کرنا چاہئے اور پھر ہم تصدیق کریں گے اور دیکھیں گے کہ پابندیاں ٹھیک طرح سے ختم کردی گئی ہیں ، پھر ہم اپنے وعدوں پر واپس آجائیں گے۔ یہ ہماری یقینی پالیسی ہے اور ملکی عہدیداروں کا بھی اتفاق رائے ہے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha