16 جنوری، 2021 2:02 PM
Journalist ID: 2392
News Code: 84187507
0 Persons
کسی بھی دشمن کو کم سے کم وقت میں جواب دیں گے: جنرل باقری

تہران، ارنا – ایرانی مسلح افواج کے سربراہ نے پیامبر اعظم (ص) کے نام سے جنگی مشق میں 1800 کلو میٹر طویل اہداف کے انتخاب کو معنی خیز قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگرچہ ایران کا کوئی حملہ کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے لیکن اگر کوئی دشمن ہمارے ملک پر حملہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے تو اس کا پوری طاقت اور کم وقت میں حملہ کیا جائے گا۔

یہ بات میجر جنرل "محمد باقری" نے ہفتہ کے روز اس جنگی مشق کے موقع پر کہی۔
انہوں نے کہا کہ اس مشقیں جو گزشتہ دو ہفتوں کے دوران کی گئیں اگلے بدھ تک شدت اور بیک وقت جاری رہیں گی۔
جنرل باقری نے کہا کہ ان مشقوں کا انعقاد ایرانی میزائل فورس کو ظاہر کرتا ہے ، جس کی حدود مختصر ، درمیانے اور لمبے عرصے سے ہیں اور پوری طاقت کے ساتھ اسلامی وطن اور ایران کے قومی مفادات اور اہداف کے دفاع کرنے کے لئے تیار ہیں۔
انہوں نے بحر عمان کے جنوب میں 1800 کلومیٹر سے زیادہ اور بحر ہند کے آغاز پر اہداف کے انتخاب کو معنی خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ بحری مقاصد کے لئے بڑی تعداد میں طویل فاصلے تک مار کرنے والے میزائلوں کا انتخاب اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ اگر اسلامی جمہوریہ ایران کے دشمن قومی مفاد ، سمندری تجارتی راستوں اور ہماری سرزمین میں ناجائز مفادات رکھتے ہیں تو ، انھیں نشانہ بنایا جائے گا اور میزائل کارروائی کے ذریعہ اسے تباہ کردیا جائے گا۔
پاسداران اسلامی انقلاب کی فضائیہ فورسز کی "پیامبر اعظم (ص)" نامی 15 ویں جنگی مشق کے پہلے مرحلے کا مشترکہ میزائل اور ڈرون آپریشن سے ایران کے مرکزی صحرا کے عمومی علاقے میں انعقاد کیا گیا۔
تفصیلات کے مطابق، 15 ویں پیامبر اعظم (ص) جنگی مشق کا جمعہ کے روز کو "یا فاطمہ الزہرا (س) کے کوڈ سے زمین سے بیلسٹک میزائلوں کی بڑے پیمانے پر فائرنگ اور ایران کے مرکزی صحرا کے عمومی علاقے میں جارحانہ بمبار ڈرون کے ذریعے آپریشنوں کے نفاذ کیساتھ انعقاد کیا گیا۔
منعقدہ اس مشق میں پاسداران اسلامی انقلاب کے کمانڈر بریگیڈیئر جنرل "حسین سلامی"، پاسداران انقلاب کی فضائیہ کے سربراہ بریگیڈئیر جنرل "امیر حاجی زادہ" اور دیگر اعلی فوجی حکام نے حصہ لیا ہے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 9 =