بین الاقوامی پابندیوں کے باوجود ایرانی سائنسی ترقی کی رفتار جاری ہے

تہران، ارنا - اسلامی عالمی سائنس حوالہ ڈیٹا بیس (آئی ایس سی) کے سربراہ نے کہا ہے کہ بین الاقوامی پابندیوں کے باوجود گذشتہ 2 دہائیوں کے دوران دنیا کے سب سے بڑے 20 ممالک میں سے ایرانی سائنس منفرد اور ایران میں پیدا ہونے والی سائنسی تحریک کی توسیع جاری ہے۔

محمد جواد دہقانی نے بدھ کے روز کہا کہ پچھلے سالوں میں ملک کی سائنس کی پیداوار پر توجہ دینا بہت ضروری ہے۔ 
تاکہ 2019 میں دنیا میں ملک کی سائنس کی پیداوار کا کوٹہ تقریبا 2٪ تھا اور اعلی سائنس کی پیداوار یا سائنس کی پیداوار کے معیار کا حصہ تقریبا 3.5فیصد تک پہنچ گیا۔ . خطے میں سن 2019 میں سائنس کی کل پیداوار میں ایران کا کوٹہ تقریبا 29 فیصد ہے اور عالم اسلام کے ممالک میں تقریبا 20 فیصد ہے۔

انہوں نے ایران میں 2016 کے بعد سے سائنس کی پیداوار کے بارے میں بتایا کہ 2012 کو (Web Of Science (WOS  میں سائنس کی پیداوار کی تعداد 31 ہزار 41 دستاویزات کے برابر تھی ، جس کی تعداد 2019 میں بڑھ کر 61 ہزار اور 682 دستاویزات بن گئی۔

دہقانی نے بتایا کہ ایران سب سے بڑے 25 ممالک میں سے 10.4فیصد ترقی کیساتھ دوسری پوزیشن اور چین 12.9 فیصد ترقی کے ساتھ پہلی اور پرتگال بھی 7.8 فیصد ترقی کے ساتھ تیسری پوزیشن پر ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha