امریکہ کیجانب سے قانون اور سفارتکاری کی تذلیل عالمی امن کیلئے خطرہ ہے: ظریف

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے جوہری معاہدے کی پانچویں سالگرہ کے موقع پر اس معاہدے کو گزشتہ دہائی کی سب سے بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے جوہری معاہدے سے متعلق ٹرمپ کے غیرقانونی رویے کی تنقید کی۔

ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے منگل کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج جوہری معاہدے کی پانچویں سالگرہ ہے جسے گزشتہ دہائی کی سب سے بڑی کامیاب سفارتکاری سمجھا جاتا ہے اور اس بات کی یاد دہانی کر رہا ہے کہ امریکی غیر قانونی رویہ بین الاقوامی اصولوں کی پیمائش کرنے کا معیار نہیں ہونا چاہئے۔

ظریف نے مزید کہا کہ امریکہ کیجانب سے قانون اور سفارتکاری کی تذلیل، دنیا میں اس کی بدنامی کے علاوہ امریکہ اور دنیا کے امن کو خطرہ میں ڈالتا ہے۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی حکومت کے ترجمان نے بھی جوہری معاہدے کی پانچویں سالگرہ قریب ہونے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سالوں کے دوران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی اور ساتھ ہی ٹرمپ کے ذریعے ایران کیخلاف سخت سے سخت پابندیاں عائد کرنے کی وجہ سے ہم اس معاہدے کے ثمرات سے مستفید نہ ہوسکیں اور بعض نے بھی جوہری معاہدے سے متعلق غیر تعمیری اور عدم انصاف پر مبنی رویہ اپنایا۔

ربیعی نے کہا کہ امریکہ نے ایرانی عوام کو جوہری معاہدے کے معاشی ثمرات سے مستفید ہونے نہیں دیا اور حتی کہ خود امریکہ کو بھی بین الاقوامی صفحے اور عوامی رائے میں بہت نقصانات کا شکار ہوا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 10 =