امریکی حکومت کو بہانے بنانے کے بجائے اپنے رویے کو درست کرنا ہوگا: ظریف

تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ پوری دنیا اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ امریکہ کے ساتھ کوئی معاہدہ کرے وہ کسی بھی لمحے میں اسے نظرانداز کرے گا اور موجودہ امریکی حکومت کو بہانے بنانے کے بجائے اپنے رویہ کو درست کرنا ہوگا۔

یہ بات "محمد جواد ظریف" نے منگل کے روز امریکہ کے ساتھ مذاکرات سے متعلقہ بعض خیالات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ امریکہ کے ساتھ کوئی مذاکرہ ممکن نہیں ہے اور امریکیوں نے یہ ظاہر کیا ہے کہ ان کے مذاکرات اور ان کے نتائج پر اعتماد نہیں کیا جاسکتا۔
ظریف نے امریکہ پر عالمی تناظر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ پوری دنیا اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ امریکہ کے ساتھ کوئی معاہدہ کرے وہ کسی بھی لمحے میں اسے نظرانداز کرے گا اور موجودہ امریکی حکومت کو بہانے بنانے کے بجائے اپنے رویہ کو درست کرنا ہوگا۔
انہوں نے گزشتہ آٹھ سال سے پہلے برطانوی سفارتخانے پر حملے کے نتیجے میں قیمتی سامان پر نقصان پہنچانے کے لئے ان کو معاوضہ دینے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں بین الاقوامی قانون میں قواعد موجود ہیں اور ایرانی حکومت نے اعلان کردیا کہ غیر ملکی سفارت خانوں کے تحفظ کو برقرار رکھنا اس حکومت کی ذمہ داری ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ تمام ممالک کے حکام نے اس موضوع پر زور دیا اور فریقین کو اس پر مذاکرات کرنا ہوں گے اور ابھی تک کوئی اقدام نہیں کیا گیا ہے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 5 =