ایرانی مذہبی راہنماء کی قرآن پاک اور پیغمبر اسلام کی توہین کی مذمت

قم، ارنا – ایرانی مرجع تقلید آیت اللہ عبد اللہ جوادی آملی نے اپنے ایک پیغام قرآن پاک اور پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی توہین کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم فرانس اور فرانس کی طرح ممالک کو بھی خبردار کرتے ہیں کہ اس سرزمین اور ملک میں کسی کو بھی قرآن مجید اور پیغمبر اکرم (ص) کے مقدس مقام کی توہین کرنے کی اجازت نہ دیں۔

انہوں نے اس پیغام میں کہا کہ قرآن پاک اور پیغمبر اسلام پر توہین کرنے والوں کو جان لینا چاہئے کہ وہ درخت کی شاخ پر بیٹھے ہوئے ہیں اور اس کی جڑیں کاٹ رہے ہیں، وہ دنیا کو استدلال کے قریب لانے کے لئے آئے ہیں تاکہ وہ عقل اور اتحاد سے کامل صحت اور امن کے ساتھ زندگی گزار سکیں۔
اس بیان کے مطابق، دماغ کے بغیر دنیا پہلی اور دوسری عالمی جنگ یا پراکسی وار بن جاتی ہے، جو دن میں تین بار قتل کے ہتھیاروں سے بنتی ہے ، یہ دنیا ہے! یا تو یہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے مبارک وجود اور قرآن کریم کی توہین ہے۔
اس پیغام پر زور دیا گیا ہے کہ ہم فرانس کو بھی خبردار کرتے ہیں کہ اس سرزمین میں ، اس ملک میں کسی کو بھی قرآن مجید کے مقدس مقام کی توہین کی اجازت نہ دیں اگر کوئی اجنبی ممالک کو پریشان کرنے کا ارادہ کرتا ہے تو وہ کامیاب نہیں ہوگا۔
تفصیلات کے مطابق، پیرس میں شائع ہونے والے مزاحیہ رسالہ "شارلی ابدو" نے ایک توہین آمیز اقدام میں پیامبر (ص) کی توہین کرتے ہوئے نقشوں کو دوبارہ شائع کیا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 7 =