خطی ممالک کو غیرعلاقائی طاقتوں کی ضرورت نہیں ہے: ایرانی صدر

بندرعباس، 17 فروری، ارنا- ایرانی صدر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور خطی ممالک ایک دوسرے کیساتھ علاقائی پانیوں کی اہم دفاعی طاقت ہیں جنہیں خطے میں غیرعلاقائی ممالک کی ناجائز موجودگی کی ضرورت نہیں ہے۔

صدر روحانی نے مزید کہا کہ ایران اب خطے کا ایک اہم طاقتور ملک بن سکتا ہے۔
ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "حسن روحانی" نے جنوبی صوبے ہرمزگان کے شہر بندرعباس میں "فاتح" سب میرین کی رونمائی تقریب میں کیا۔
انہوں نے ایرانی بحریہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے ملک کی دفاعی طاقت میں ہونے والی ترقیوں کو سراہا۔
صدر روحانی نے کہا کہ ایرانی بحریہ سو میل کے فاصلوں سے دور، ملکی مفادات اور بین الاقوامی پانیوں کی سلامتی کو محفوظ بناسکتی ہے۔
انہوں نے کہا ایرانی بحریہ نہ صرف خلیج فارس، بحیرہ عمان اور بحیرہ خزر کی امن و سلامتی کا تحفظ کرے گی بلکہ بین الاقوامی پانیوں میں ایرانی مفادات اور جہازرانی کی امن و سلامتی کے تحفظ کیلئے موجود ہے۔
انہوں نے کہا کہ اسلامی انقلاب کے 40 سال گزرنے کے بعد اب اسلامی جمہوریہ ایران مختلف شعبوں میں خودکفیل ہوگیا ہے۔
صدر روحانی نے ایران پر مسلط کردہ جنگ کے دوراں، ملک پر دشمن کے دباوؤں کا تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب اس بات کا باعث بنی کہ ہم بھر پور کوششوں کیساتھ دفاعی اور سمندری صنعت میں اپنے پیروں پر کھڑے ہوکر خود کفیل ہوجائیں۔
انہوں نے کہا کہ خوش قسمتی سے آج جمہوریہ اسلامی ایران، بحری، بری اور فضائی شعبوں میں مکمل طور پر خود کفیل ہوگیا ہے اور حالیہ دہائیوں میں ایران نے دفاعی صنعت میں غیر معمولی ترقی کی ہے۔
ایرانی صدر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور خطی ممالک ایک دوسرے کیساتھ علاقائی پانیوں کی اہم دفاعی طاقت ہیں جنہیں خطے میں غیرعلاقائی ممالک کی ناجائز موجودگی کی ضرورت نہیں ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی بحریہ خطے میں آزاد جہازرانی اور ساری دنیا تک توانائی کی رسائی کا دفاع کرے گی جس سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ ایرانی طاقت دوسرے ممالک کیلئے خطرہ نہیں ہے۔
*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@