یوم 4 نومبر ایرانی عوام کی آزادی کی جد و جہد کی یاد دہانی ہے: صدر روحانی

تہران، ارنا – ایران کے صدر مملکت نے یوم 4 نومبر (13 آبان) کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ دن ایرانی طالب علموں کی بہادری اور عالمی سامراج کے خلاف قومی یوم مزاحمت اور یوم طلبا کے نام سے رکھا دیا گیا ہے اور ہمارے عوام کی آزادی کی جد و جہد کی یاد دہانی ہے.

ان خیالات کا اظہار "حسن روحانی" نے پیر کے روز کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.

انہوں نے کہا کہ یوم طالب علم اجنبیوں کی سازشوں کے خلاف ایرانی عوام کی ہوشیاری اور بہادری کی نشاندہی کر رہا ہے.
صدر روحانی نے کہا کہ امریکہ کی مختلف حکومتوں نے گزشتہ دہائیوں میں متعدد طریقوں کے ساتھ اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف کاروائیوں کی ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ 1964 کے 4 نومبر کو امریکہ نے براہ راست شاہی حکومت کو بانی انقلاب امام خمینی (رح) کی جلاوطنی کا حکم دے دیا کیونکہ امام خمینی نے قانون کیپٹلیشن کے خلاف تقریر میں فرمایا کہ ایرانی قوم کی نظر میں امریکی حکومت سے زیادہ حقیر حکومت کوئی نہیں ہے، لہذا یوم 4 نومبر ابتدا سے امریکہ مخالف ایک رجحان تھا.
انہوں نے کہا کہ امریکہ نے 1978 کے 4 نومبر میں بھی ایرانی اندرونی مسائل اور اسلامی انقلاب کی تحریک میں مداخلت کی اور ایرانی طلبا نے امریکی کاروائی پر اپنے ردعمل کا اظہار کیا.
ایرانی صدر نے کہا کہ امریکہ نے ایک بار پھر 2018 کے 4 نومبر کو ہمارے ملک کے خلاف نئی پابندیاں عائد کی مگر بے شک وہ اس سازش میں ناکام ہوگا اور اب امریکی حکام سمجھ رہے ہیں کہ پابندیوں کے راستے سے کوئی نتیجہ حاصل نہیں کریں گے.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 6 =