مسجد الاقصی میں نماز جمعہ کے وقت صہیونی کے سخت حفاظتی اقدامات

تہران، ارنا- صیہونی ریاست کے خبر رساں ذرائع نے مسجد الاقصی میں رمضان المبارک کے آغاز سے قبل فلسطینیوں کی آخری نماز جمعہ کے موقع پر مقبوضہ شہر قدس میں سخت حفاظتی اقدامات کی اطلاع دی ہے۔

صیہونی ریاست کے میڈیا "مکان" نے آج بروز جمعہ اطلاع دی ہے کہ مسجد الاقصی میں نماز جمعہ کے انعقاد کے بعد بدامنی کے خدشے کے پیش نظر مقبوضہ شہر قدس کے پرانے حصے میں تقریباً 3000 پولیس فورس تعینات کر دی گئی ہے۔

اس نیوز ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ صیہونی ریاست نے مسجد الاقصی میں نمازیوں کے داخلے پر پابندیاں عائد کی ہیں اور کہا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے زیر کنٹرول علاقوں سے نمازیوں کے داخلے پر پابندی ہے اور صرف 60 سال سے زیادہ عمر کے مردوں اور خواتین کو داخلے کی اجازت ہے اور 45 سے 60 سال کے مردوں کو بھی خصوصی اجازت نامہ ملنا چاہیے۔

در این اثنا روس کے الیووم ٹیلی ویژن چینل نے آج اطلاع دی ہے کہ مغربی کنارے اور غزہ کی پٹی کے اطراف میں اسرائیلی فوج کے یونٹس اپنے الرٹ کی سطح کو بڑھا رہے ہیں اور آئندہ چند ہفتوں میں فلسطینی مزاحمت کی نئی لہر کے لیے حکومت کے حفاظتی آلات کو تیار کر رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیر جنگ "بنی گانتس" نے آج صبح مقبوضہ فلسطینی سرحدوں کی اسپیشل فورسز کی ریزرو فورسز کو رضاکارانہ طور پر بلانے کا حکم دیا اور کہا کہ دیجبانی یونٹ کے 300 ریزرو افسران کو بھی بلایا جائے گا۔

واضح رہے کہ مقبوضہ فلسطینی سرزمین نے حالیہ دنوں میں صیہونیوں کے خلاف تین کارروائیوں کا مشاہدہ کیا ہے جس کے دوران 11 صیہونی ہلاک ہوئے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha