قطری امیر کی ایرانی صدر کو جی ای سی ایف سربراہی اجلاس میں شرکت کی دعوت

تہران، ارنا - قطر کے وزیر خارجہ نے ایرانی صدر کو گیس برآمد کرنے والے ممالک کے فورم (جی ای سی ایف) کے سربراہی اجلاس میں شرکت کے لیے قطر کے امیر کا سرکاری دعوت نامہ پیش کیا۔

ایران کے دورے پر آئے ہوئے محمد بن عبدالرحمن آل ثانی نے جمعرات کے روز علامہ ابراہیم رئیسی کے ساتھ ملاقات کی۔
اس ملاقات کے دوران ایرانی صدر نے کہا کہ ہمسایہ ممالک کے درمیان تعلقات میں توسیع سے سلامتی قائم ہو سکتی ہے۔
صدر رئیسی نے کہا کہ پیداواری ممالک کو توانائی کی پالیسیوں میں تعاون اور ہم آہنگی کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ نئی ایرانی حکومت کی ترجیح ہمسایہ اور علاقائی ممالک کے ساتھ تعلقات کو وسعت دینا ہے اور ایران اس بات پر یقین رکھتا ہے کہ مزید علاقائی تعاون خطے میں امن، سلامتی اور ترقی کو فروغ دے گا۔
انہوں نے مختلف دوطرفہ اور علاقائی شعبوں میں قطر کے ساتھ تعاون کے لیے ایران کی آمادگی کا بھی اظہار کیا۔
رئیسی نے اس بات پر زور دیا کہ مغربی ایشیا میں بیرونی طاقتوں کی موجودگی سے کشیدگی اور عدم تحفظ میں اضافہ ہوتا ہے، غیر ملکی خطے کے ممالک اور حکومتوں کی شناخت اور شخصیت کا احترام نہیں کرتے اور یہ سمجھتے ہیں کہ وہ دنیا کے مالک ہیں، جب کہ انہیں ترک کرنا چاہیے۔ تکبر کا جذبہ اور قوموں کی شناخت اور ثقافت کو پہچانتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ایرانی عوام نے مسلسل اپنے اصولی موقف کا اعادہ کیا اور ترقی کی راہ میں مضبوطی سے پیش قدمی کی اور دشمن کیا چاہتا ہے اس کی پرواہ نہیں کی حتیٰ کہ امریکیوں نے باضابطہ طور پر اعلان کیا کہ ان کا زیادہ سے زیادہ دباؤ کامیاب نہیں ہوا۔
قطری وزیر خارجہ نے اپنی طرف سے کہا کہ ان کا ملک مختلف سیاسی اور اقتصادی شعبوں میں ایران کے ساتھ تعلقات کو بڑھانے کے لیے ہر ممکن کوشش کرنے کے لیے پرعزم ہے۔
الثانی نے کہا کہ قطر کا ایران جیسا ہی نظریہ ہے کہ خطے میں بیرونی قوتوں کی موجودگی کے منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں اور یہ علاقائی ممالک پر منحصر ہے کہ وہ امن اور ترقی کے لیے اپنی راہیں خود بنائیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha