ویانا میں ماہرین کی سطح پر پابندیاں ہٹانے کے اجلاس کا انعقاد

ویانا، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران اور گروہ 1+4 کے نمائندوں نے ویانا مذاکرات کے آٹھویں دور کے فریم ورک کے اندر ایران کیخلاف پابندیوں کی منسوخی پر ایک اجلاس کا انعقاد کیا۔

رپورٹ کے مطابق، اس اجلاس میں فریقین نے پابندیوں کے موثر اور قابل تصدیق خاتمے کیلئے مذاکرات کی تازہ ترین صورتحال کا جائزہ لیا۔

یہ ملاقاتیں جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے آخری اجلاس میں طے پانے والے معاہدے کے مطابق ہو رہی ہیں اور مذاکرات میں شریک ممالک کے نمائندوں نے غیر قانونی اور جابرانہ پابندیاں ہٹانے کی ترجیح پر زور دیا۔

نیز ان اجلاسوں میں فریقین، پابندیوں کے خاتمے کی تصدیق کیلئے فریم ورک، اشارے اور معیار کے تعین اور امریکہ کیجانب سے غیر قانونی اقدامات نہ دہرانے کی ضمانت دینے پر توجہ مرکوز کرتے ہیں ۔

واضح رہے کہ ویانا مذاکرات کے آٹھویں دور کا 27 دسمبر میں آغاز کیا گیا اور 30 دسمبر کو نئے عیسوی سال کی چھٹیوں اور مذاکراتی ہالز کی بندش کی وجہ سے مذاکرات کا یہ دور، تین دن کے وقفے کے بعد پچھلے پیر کو از سر نو آغاز کیا گیا اور اب بھی ان کا سلسلہ جاری ہے۔

کہا جاتا ہے کہ مذاکرات میں شریک اکثر وفود کا کہنا ہے کہ مذاکرات آگے بڑھ رہے ہیں اور اگر مغربی فریق ایران پر الزام تراشی اور مصنوعی ڈیڈ لائن مقرر کرنا بند کر دے تو  2016 کے معاہدوں کی جلد بحالی ہوگی۔

نیز ایرانی وزیر خارجہ "حسین امیر عبداللہیان" نے حالیہ دنوں میں ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ اسلامی جمہوریہ ایران " نئی پابندیوں کے عدم نفاذ و نیز ملک کیخلاف عائد پابندیوں کی منسوخی کے بعد ان کا پھر سے عدم نفاذ" کا خواہاں ہے اور اگر مغربی فریقین کو سنجیدہ عزم اور ارادہ ہو تو ایک اچھے معاہدے کے حصول کا امکان ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha