رہبر معظم کو شہید جنرل سلیمانی کا یادگاری خط پیش کیا گیا

تہران، ارنا- شہید جنرل سلیمانی کی بیٹی اور تہران شہری کونسل کی رکن نرجس سلیمانی نے کہا ہے کہ یہ مخطوطہ جنرل سلیمانی کی شہادت کی دوسری برسی کے موقع پر رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای کو تحفہ میں دیا گیا ہے۔

نرجس سلیمانی نے تہران شہری کونسل کے اجلاس سے خطاب میں جنرل سلیمانی کے اہل خانہ کی رہبر انقلاب سے ملاقات کا حوالہ دیا اور کہا کہ انہوں نے انہیں سلیمانی کا ایک مخطوطہ پیش کیا۔
شہید جنرل سلیمانی کے مخطوطے میں لکھا ہے، 'میں اپنے قاتل کو ڈھونڈ رہا ہوں اور میں اسے دیکھنے کے لیے کتنا بے تاب ہوں۔ یہ مجھے خوشی کے عروج پر لے جائے گا۔ آؤ، پلیز، میرا صبر ختم ہو گیا ہے، استرا لے کر آؤ، میرا گلا کٹنے کو تیار ہے، میرا خون میرے جسم سے باہر پھینکنے کو تیار ہے۔ آؤ مجھے اس عقوبت خانے سے، میری قید کی یہ کنجی، آؤ۔ میں ایسا آزاد مزاج شخص ہوں کہ میں اللہ کی قسم کھا کر کہتا ہوں کہ اگر آپ مجھے شہید بھی کر دیں تو میں آپ کی شفاعت کروں گا۔ میرے خدا، میں ان صحراؤں اور شہروں میں جس چیز کی تلاش کرتا ہوں اس کا تو گواہ ہے۔ مضبوط عزیز، مجھے میرے نقصانات میں لے جا'۔
یہ مخطوطہ 1 اکتوبر 2014 کا ہے اور بغداد میں لکھا گیا تھا۔ قائدِ انقلاب کو پیش کیے گئے شہید سلیمانی کے مسودے کا کیا مواد تھا؟ رہبر معظم جنرل حاج قاسم سلیمانی کی شہادت کی دوسری برسی کے موقع پر، یادگاری کمیٹی کے ارکان اور اس شہید کے اہل خانہ نے ہفتہ کے روز رہبر معظم انقلاب اسلامی سے ملاقات کی۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha