شہید سلیمانی کے قتل کے ملوثین اور مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لائیں گے: خطیب زادہ

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ وزارت خارجہ جنرل سلیمانی کے قتل کے ملوثین اور مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لانے تک خاموش نہیں بیٹھے گی۔

یہ بات سعید خطیب زادہ نے آج بروز پیر اپنی ہفتہ وار پریس کانفرنس میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ آج شہید سلیمانی(اتحاد اور طاقت کا مظہر) کی دوسری سالگرہ ہے وہ شہید جو آج زندہ ہے اور ایرانی وزارت خارجہ جب تک اس شہید کے قتل کے عناصر اور ملزموں کو عدالت کے کٹھرے میں نہ لائے تب تک خاموش نہیں رہے گی۔

کی برسی ہے، اتحاد اور طاقت کی علامت، ایک شہید جو آج زندہ ہے اور سردار سلیمانی کا نام اور یاد اور وزارت خارجہ ہے۔ اس دن تک اس قتل کے مجرم اگر اس عظیم جنرل کو انصاف کے کٹہرے میں نہ لائے تو خاموش نہیں بیٹھیں گے۔

آنے والے دنوں میں صدر کے دورہ ماسکو کے بارے میں انہوں نے کہا کہ یہ دورہ مسٹر پیوٹن کی دعوت پر ہوگا جس میں اقتصادی، سیاسی اور ثقافتی تعاون پر توجہ دی جائے گی۔

خطیب زادہ نے ایران اور روس کے درمیان تعاون کی دستاویز کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعاون کی دستاویز کا موضوع انجام کیا جا رہا ہے لیکن آپ کو اس دورے کی صحیح تفصیلات کو صدارتی دفتر سے پوچھنا چاہیے۔

انہوں نے افغانستان میں طالبان کی حکومت کے حوالے سے ایران کے موقف کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ایران اور پڑوسی ممالک کا مطالبہ افغانستان کے تمام فرقوں اور گروپوں پر مشتمل ایک جامع حکومت کی تشکیل ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ویانا مذاکرات کے بارے میں بتایا کہ اگر آج ہمارے پاس ایک مشترکہ متن ہے، تو اس کی وجہ یہ ہے کہ مغرب نے محسوس کیا ہے کہ اسے زیادہ سے زیادہ مطالبات سے دستبردار ہونا چاہیے، اور یہ متن ویانا مذاکرات میں مغربی فریقین کی حقیقت پسندی کا نتیجہ ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@         

https://twitter.com/IRNAURDU1

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha