جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کا اجلاس آج انعقاد کیا جاتا ہے: باقری کنی

ویانا، ارنا- اعلی ایرانی مذاکرات کار "علی باقری کنی" نے یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے ڈپٹی سیکرٹری "انریکہ مورا" سے ملاقات کے بعد جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے اجلاس کے انعقاد کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں مورا سے ہم آہنگی کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق، نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور اور ایرانی مذاکرات کار وفد کے سربراہ نے آج بروز جمعہ کو ارنا نمائندے سے گفتگو کیا۔

اس موقع پر انہوں نے " کیا ایران کیجانب سے جوہری معاہدے کے دیگر فریقین کو پیش کردہ دو دستاویزات کے حوالے سے بھی بات چیت کی گئی ہے؟" کے سوال کے جواب میں کہا کہ دیگر فریقین کے نقطہ نظر کو جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے اجلاس میں سننے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

یورپی یونین نے ویانا میں تعینات صحافیوں سے کہا ہے کہ جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے اجلاس کا آج بروز جمعہ کو ویانا کے مقامی وقت کے مطابق 15:30 بجے میں کوبوررگ ہوٹل میں انعقاد کیا جائے گا۔

اس اجلاس کا یورپی فریقین کی درخواست سے انعقاد کیا جا تا ہے تا کہ ان کو اپنے اپنے ممالک میں واپس جاکر ایرانی تجویز کردہ دستاویزات کا جائزہ لینے کا موقع مل جائے۔

واضح رہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے بدھ کی رات کو ایران کیخلاف پابندیوں کی منسوخی اور ایرانی جوہری مسائل کے فریم ورک کے اندر اپنی تجویز کردہ دستاویزات کو دوسری فریقین کو پیش کیا۔

نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے گزشتہ روز میں کہا کہ ہمیں امید ہے کہ دوسری فریقین، اسلامی جمہوریہ ایران کی تجاویز پیش کرنے کے بعد وہ جلد از جلد کسی نتیجے پر پہنچنے میں کامیاب ہو جائیں گے تاکہ جمع کرائی گئی دو دستاویزات پر اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ سنجیدہ بات چیت کی جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے دوسری طرف سے کہا کہ ہم مذاکرات کا سلسلہ جاری رکھنے کے لیے تیار ہیں اور ہم بات چیت جاری رکھنے کے لیے ویانا میں ہیں؛  انہیں ان دستاویزات کی جانچ پڑتال کرنے کی ضرورت ہے جو ہم نے انہیں فراہم کیے ہیں۔ اگر وہ مذاکرات جاری رکھنے کے لیے تیار ہیں تو ہمیں اس سلسلے میں کوئی رکاوٹ نہیں ہوگی۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha