ایران میں 16 ملین ڈالر کی مالیت پر مشتمل کیویار کی برآمدات

سبزوار، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران میں گزشتہ سال کے دوران، 16 ملین ڈالر کی مالیت پر مشتمل کیویار کی برآمدات ہوئی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار ایرانی ماہی گیری تنظیم کے جینیاتی آبی وسائل کی تعمیر نو اور تحفظ کے دفتر کے ڈائریکٹر جنرل "ناصر کرمی راد" نے منگل کے روز، مشہد میں واقع شہر سبزوار میں اسٹرجن کی پرورش کے مراکز کا دورہ کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر انہوں نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ گزشتہ سال کے دوران، ملک میں 3 ہزار 500 ٹن اسٹرجن گوشت اور 12 ٹن کیویار کی برآمدات ہوئی۔

کرمی راد نے مزید کہا کہ پیداوار کی اس مقدار میں سے، کیویار برآمد کرنے کے علاوہ، ایک ہزار ٹن اسٹرجن کا گوشت بھی ملک سے کسٹم اور مسافروں کے ذریعے برآمد کیا گیا۔

ایرانی ماہی گیری تنظیم کے جینیاتی آبی وسائل کی تعمیر نو اور تحفظ کے دفتر کے ڈائریکٹر جنرل نے اسٹرجن کی پیداوار میں اسلامی جمہوریہ ایران کی پوزیشن کو فروغ دینے کا ذکر کرتے ہوئے کہ عالمی ادارہ برائے زراعت اور خوراک کے اعدادوشمار کے مطابق، ایران 2019ء میں اسٹرجن کے گوشت کی پیداوار میں چوتھے نمبر پر تھا اور اب چین کے بعد دوسرے نمبر پر پہنچنے کی توقع کوئی دور کی بات نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ بیلوگا کی پیداوار میں بھی ایران کو پہلے نمبر پر رکھا گیا ہے، جو حالیہ برسوں میں پرورش کی گئی کیویار کی سب سے قیمتی نسل ہے۔

کرمی راد نے کہا کہ کیویار کی پیداواری صلاحیت کا منصوبہ 2014 میں 10 سال کی مدت کے لیے 10 ہزار ٹن گوشت اور 100 ٹن کیویار کی مقدار میں بنایا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک کے 22 صوبوں میں 7 ہزار ٹن اسٹرجن گوشت اور 110 ٹن کیویار کی پیداواری صلاحیت ہے، جو 2025 تک مقررہ مقدار سے زیادہ ہوگی۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha