پاکستانی صدر کا ایران کیساتھ بارٹر ٹریڈ میکنزم کے آپریشن پر زور

اسلام آباد، ارنا – پاکستانی صدر پاکستان نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کی اہمیت پر زور دیا تہران کے ساتھ بارٹر ٹریڈ میکانزم کے استعمال، تجارتی میکانزم اور اقتصادی روابط کو فروغ دینے کے لیے مشترکہ اجلاسوں کے انعقاد کا مطالبہ کیا۔

یہ بات "عارف علوی" نے اتوار کے روز ترکمان دارالحکومت اشک آباد میں اقتصادی تعاون تنظیم (ECO) کے 15ویں سربراہی اجلاس کے موقع پر اپنے ایرانی ہم منصب علامہ "سید ابراہیم رئیسی" کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
صدر علوی نے صدر رئیسی کو حالیہ صدارتی انتخابات میں کامیابی کے بعد عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد دی۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران پاکستان کو ایک اہم مسلم پڑوسی اور بھائی سمجھتا ہے جس کی بنیاد دونوں ممالک کے درمیان گہرے تاریخی، لسانی، مذہبی اور ثقافتی روابط ہیں۔
صدر علوی نے روشنی ڈالی کہ پاکستان مشترکہ خوشحالی اور علاقائی روابط کے لیے جیو اکنامکس کو سب سے زیادہ ترجیح دیتا ہے۔
انہوں نے پاکستان سے ترکی اور آذربائیجان کے لیے انٹرنیشنل روڈ ٹرانسپورٹ (ٹی آئی آر) کی ترسیل کے حالیہ آپریشنل ہونے پر اطمینان کا اظہار کیا جو کہ ای سی او کے پورے خطے کے لیے فائدہ مند ثابت ہوگا۔
پاکستانی صدر نے تہران میں حالیہ مشترکہ تجارتی کمیٹی کا اجلاس کا حوالہ دیتے ہوئے تجارت اور معیشت کے لیے دوطرفہ میکانزم کے باقاعدہ انعقاد کی اہمیت پر اور اس سلسلے میں بارٹر ٹریڈ میکانزم کے استعمال پر بھی زور دیا۔
صدر علوی نے کشمیری عوام سے ایران کی مسلسل حمایت بالخصوص ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ سید علی خامنہ ای کا شکریہ ادا کیا۔
انہوں نے علاقائی صورتحال، خاص طور پر افغانستان کے مسئلے میں پڑوسی ممالک کے درمیان نظریات کے بڑھتے ہوئے ہم آہنگی پر تبصرہ کرتے ہوئے ایک پرامن، مستحکم اور خوشحال افغانستان کے مشترکہ مقاصد کے حصول کے لیے قریبی مربوط نقطہ نظر کی ضرورت پر زور دیا۔
انہوں نے اس سلسلے میں افغانستان کے مالیاتی اثاثوں کو منجمد کرنے پر زور دیتے ہوئے افغانستان کے لوگوں کی تکالیف کو کم کرنے کے لیے انسانی اور اقتصادی امداد کی فوری فراہمی پر زور دیا۔
صدر علوی نے صدر رئیسی کو جلد از جلد پاکستان کے دو طرفہ دورے کی دعوت کا اعادہ کیا۔
دونوں صدور نے باہمی دلچسپی کے تمام امور پر مصروف رہنے پر اتفاق کیا۔
دونوں ممالک کے اعلی حکام نے باقاعدہ اعلیٰ سطحی بات چیت پر اطمینان کا اظہار کیا جس سے دوطرفہ تعاون کے مختلف راستوں کو تقویت ملی ہے۔
اس ملاقات میں ایرانی وزیر خارجہ حسین امیرعبداللہیان، ایران اور ترکمانستان میں تعینات پاکستانی سفرا، پاکستانی وزارت خارجہ کے دپٹی اور دونوں ممالک کے اعلی حکام موجود تھے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha