ایران کا بورڈ آف گورنرز کے اجلاس میں صیہونی کے الزامات کا فیصلہ کن جواب

لندن، ارنا – ویانا میں عالمی تنظیموں میں تعینات ایرانی مستقل نمائندے نے کہا ہے کہ اسرائیل کی جناب سے عدم پھیلاؤ اور حفاظتی اقدامات کی اہمیت پر تبلیغ کرنا ایک مافیا گروپ کے سرغنہ کی طرف سے انسداد منظم جرائم کے قوانین کی اہمیت پر تبلیغ کرنے کی طرح ہے۔

یہ بات "محمدرضا غائبی" نے جمعرات کے روز بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی (IAEA) کے بورڈ آف گورنرز کے اجلاس میں اسرائیل کے ایران مخالف بیانات اور بے بنیاد الزامات کے جواب میں کہی۔
انہوں نے کہا کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ اسرائیلی نمائندے نے ایران کی پرامن ایٹمی سرگرمیوں پر ایک طویل اور مدھم افسانوی کہانی پیش کر کے بورڈ آف گورنرز کا قیمتی وقت ضائع کیا۔
غائبی نے کہا کہ اس بار اس ریاست کے نمائندے نے اپنی دہرائی جانے والی کہانی کا نیا نام "خاموشی کی آواز" کے نام سے تصور کرکے اسے کم بورنگ کرنے کی کوشش کی جو پھر ناکام ہوگئی۔
انھوں نے مزید کہا کہ اس سے بہتر اور دلچسپ بات یہ تھی کہ اس نے اپنی خاموش آواز کی سچی کہانی سنائی کے سامنے خطے میں اپنے وحشیانہ جرائم، خفیہ جوہری پروگرام اور جوہری دھماکوں یا پرامن ایٹمی تنصیبات کو ہدف بنانے یا ایٹمی سائنسدانوں کے قتل کی کہانی کو دوسرے ممالک کے لئے تعریف کی۔
انہوں نے اس حقیقت کا مذاق اڑاتے ہوئے کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست جو کہ کسی تخفیف اسلحہ یا ہتھیاروں کے کنٹرول کے معاہدے کا فریق نہیں ہے اور اپنی تمام جوہری تنصیبات اور سرگرمیوں کو آئی اے ای اے کے تحفظات کے معاہدوں کے حوالے کرنے کے لیے تیار نہیں ہے اسے قدر بدتمیز ہو چکی ہے کہ وہ حقائق سے کھلواڑ کر رہی ہے اور NPT کے دیگر اراکین کو اس کی تبلیغ کر رہی ہے۔
ایرانی نمائندے نے کہا کہ عدم پھیلاؤ کی اہمیت اور حفاظتی نظام کے بارے میں اسرائیل کے خطبات انسداد منظم جرائم کے قوانین کی اہمیت پر ایک مافیا گروپ کے سربراہ کے خطبات سے ملتے جلتے ہیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha