27 اکتوبر، 2021 12:41 PM
Journalist ID: 2392
News Code: 84519855
0 Persons
ایرانی صدر کا ترکمانستان کیساتھ تعلقات کو وسعت دینے پر زور

تہران، ارنا – ایرانی صدر مملکت نے ترکمانستان کے ساتھ دوطرفہ، علاقائی اور بین الاقوامی شعبوں میں تعلقات کو وسعت دینے کے لیے موجودہ عزم کا اعادہ کیا اور کہا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان تعاون کی موجودہ سطح صلاحیتوں سے بہت کم ہے۔

یہ بات علامہ "سید ابراہیم رئیسی" نے منگل کے روز ایران کے دورے پر آئے ہوئے ترکمانستانی وزیر خارجہ "رشید مردوف" کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
اس موقع پر انہوں نے دونوں ممالک کے عہدیداروں کے درمیان تعلقات کو وسعت دینے کی خواہش پر روشنی ڈالی اور کہا کہ دوطرفہ تعاون سے علاقائی امن و استحکام کو فروغ دینے میں مدد مل سکتی ہے۔
صدر رئیسی نے شنگھائی تعاون تنظیم (SCO) میں ایران کی مستقل رکنیت کی حمایت کرنے پر ترکمانستان کا شکریہ ادا کیا جس کے بارے میں ان کے خیال میں دونوں ممالک کے درمیان گہری اور مضبوط ثقافتی اور مذہبی سرحدیں ہیں۔
انہوں نے اشک آباد اور تہران کے درمیان موجودہ سطح کے تعاون پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مختلف شعبوں بالخصوص ٹرانزٹ اور توانائی کے شعبوں میں باہمی تعاون کو مزید وسعت دینے سے پورے خطے کو فائدہ پہنچے گا۔
ایرانی صدر نے افغانستان کی صورت حال پر تبصرہ کرتے ہوئے وہاں امن و سلامتی کے قیام کی ضرورت پر روشنی ڈالی جو وہاں ایک جامع حکومت کی تشکیل کا باعث بنے گی جس میں تمام نسلی اور سیاسی گروہوں کی نمائندگی ہونی چاہیے۔
ترکمانستان کے وزیر خارجہ نے بھی جامع تہران اشک آباد تعلقات کو مضبوط اور گہرا کرنے میں اپنے ملک کی دلچسپی کا اظہار کیا اور اس بات پر زور دیا کہ ترکمانستان ایران کو ایک برادر اور دوست ملک سمجھتا ہے اور اس طرح تیل، گیس، نقل و حمل اور تجارت سمیت مختلف شعبوں میں ایران کے ساتھ تعلقات اور تعاون کو بڑھانے کا خواہاں ہے۔
انہوں نے کہا کہ ترکمانستان افغانستان میں اسلامی جمہوریہ ایران کے اقدام کی حمایت کرتا ہے اور تہران کے ساتھ تمام علاقائی سطحوں پر قریبی تعلقات اور تعاون کے لیے تیار ہے۔
مردوف، جو منگل کی صبح ایک اعلیٰ سطحی وفد کی قیادت کرتے ہوئے تہران پہنچے تھے، ان کا ایرانی ہم منصب حسین امیرعبداللہیان نے استقبال کیا۔
ترکمانستان کا سفارتی وفد 16ویں سالانہ مشترکہ اقتصادی اور ثقافتی کمیشن کے اجلاس میں شرکت کرے گا۔
مردوف تہران کی میزبانی میں افغانستان کے پڑوسیوں کے دوسرے وزرائے خارجہ اجلاس میں بھی شرکت کریں گے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha