ایران اور انڈونیشیا کے وزرائے خارجہ کا افغان مہاجرین پر توجہ دینے پر زور

تہران، ارنا - ایران اور انڈونیشیا کے وزرائے خارجہ نے افغان مہاجرین کی تشویشناک صورتحال کا ذکر کرتے ہوئے عالمی برادری سے ان کے مسائل پر توجہ دینے کا مطالبہ کیا۔

حسین امیر عبداللہیان نے جمعرات کے روز انڈونیشیا کی وزیر خارجہ ریٹنو مرسودی کے ساتھ ٹیلی فون پر بات چیت میں دوطرفہ تعلقات میں تازہ ترین تبدیلیوں اور علاقائی اور بین الاقوامی دلچسپی کے امور خاص طور پر افغانستان پر تبادلہ خیال کیا۔

انہوں نے افغانستان کی موجودہ صورتحال اور اس سلسلے میں اسلامی جمہوریہ ایران کی تعمیری سفارت کاری کا ذکر کرتے ہوئے اس ملک میں داعش کی حالیہ دہشت گردانہ کارروائیوں کی مذمت کی۔

انہوں نے  قبائل اور مختلف مذاہب کے پیروکاروں کی سلامتی کے تحفظ کیلیے طالبان کی ذمہ داری کا ذکر کرتے ہوئے  افغانستان میں جامع حکومت کی تشکیل نے زور دیا۔      

ایرانی وزیر خارجہ نے پڑوسی ممالک بالخصوص اسلامی جمہوریہ ایران میں افغان مہاجرین  پر توجہ دینا عالمی برادری کی ذمہ داری ہے۔

امیر عبداللہیان نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے موقع پر حالیہ ملاقات میں دونوں فریقوں کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کا ذکر کرتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مضبوط بنانے پر زور دیا۔

اس ٹیلیفونک گفتگو میں انڈونیشیا کی وزیر خارجہ نے افغانستان میں انسانی حقوق بالخصوص خواتین کے حقوق کے تحفظ پر بھی زور دے کر افغان مہاجرین کی دیکھ بھال کو انسانی ذمہ داری قرار دیا جس پر عالمی برادری کی خصوصی توجہ کی ضرورت ہے۔

انہوں نے اپنے ایرانی ہم منصب کو جکارتہ کے دورے کی دعوت دیتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کے فروغ کا خیرمقدم کر کے طے پانے والے معاہدوں کو جلد ہی نافذ کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@         

https://twitter.com/IRNAURDU1

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha