20 اکتوبر، 2021 3:22 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 84512687
0 Persons
ایران کی 6 ہزار کلومیٹر ساحلی پٹی ہے

تہران، ارنا- ایران نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف اوشنوگرافی اینڈ اتموسفیرک سائنسز کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران کی چھ ہزار کلومیٹر ساحلی پٹی ہے اور وہ ساحلی پٹیوں تک رسائی کے لحاظ سے دنیا کے ٹاپ ایک چھوتائی ممالک میں شامل ہے۔

رپورٹ کے مطابق، "بہروز ابطحی" نے بدھ کے روز گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایران ایک سمندری ملک ہے اور اس کی بحیرہ کیسپین، خلیج فارس، بحیرہ عمان اور ایرانی جزائر سے 6 ہزار کلومیٹر ساحلی پٹی ہے اور وہ ساحلی پٹیوں تک رسائی کے لحاظ سے دنیا کے ٹاپ ایک چھوتائی ممالک میں شامل ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ لیکن اگر ہم سمندروں اور ساحلوں کی اہمیت کا لحاظ کریں تو ہماری درجہ بندی اس سے زیادہ ہوگی؛ کیونکہ خلیج فارس توانائی کے حصول کے لحاظ سے دنیا کے اہم ذخائر میں سے ایک ہے، لہذا ہم سمندری میدان اپنے آپ کو ایک اہم ملک سمجھ سکتے ہیں۔

ابطحی نے کہا کہ امریکہ، جرمنی اور جاپان ایسے ممالک ہیں جو بالترتیب سمندری میدان میں سب سے زیادہ معلومات حاصل کرتے ہیں اور وہ بدستور ڈیٹا جمع کرر ہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان تینوں ممالک نے سمندری ڈیٹا کا ایک بہت بڑا ذریعہ اکٹھا کیا ہے اور ہمیں اپنے سمندری علم کو مکمل کرنے کے لیے تعلیمی ماہرین کے ساتھ کام کرنا ہوگا تا کہ سمندری ماحول کو جان لیں اور ان کا پائیدار استعمال کرنے سمیت ان کی حفاظت کر سکیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha