ایران اور سری لنکا کے درمیان تجارتی اور مالیاتی لین دین میں اضافہ ہوگا

تہران، ارنا- ایرانی مرکزی بینک کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران اور سری لنکا کے درمیان تجارتی تعلقات بشمول درآمدات اور برآمدات میں اضافہ اور دونوں ملکوں کے درمیان مالیاتی مسائل کا حل، ایجنڈے میں ہے۔

رپورٹ کے مطابق، "اکبر کمیجانی" نے آج بروز ہفتے کو سری لنکن وزیر توانائی سے ایک ملاقات میں دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی تعلقات کے فروغ کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ توقع کی جاتی ہے کہ سری لنکا بحثیت ایک آزاد ملک کے بین الاقوامی میدان میں ایران کے مفادات کی حمایت کرے۔

انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان برآمدات اور درآمدات کی مالی فراہمی اور بلاواسطہ اور بالواسطہ طور پر ادائیگی اور وصول کے طریقہ کار کی فراہمی کیلئے مرکزی بینک اور ایران کے بینکاری نظام کی حمایت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور سری لنکا کے مابین تجارتی اور بینکاری تعلقات میں توسیع، دونوں ممالک کے درمیان برآمد اور درآمد کی مالی فراہمی اور ادائیگی اور وصول کرنے کے طریقہ کار کی بنیاد پر ممکن ہے۔

ایرانی مرکزی بینک کے سربراہ نے اس بات پر زور دیا کہ یہ ملاقات، دونوں ممالک کے درمیان بینکنگ اور تجارتی تعلقات کے فروغ کا نیا باب ہوسکتی ہے۔

انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان تعاون کو بڑھانے کے طریقے تلاش کرنے کیلئے سری لنکا کے ماہرین، ایرانی مرکزی بینک کے ماہرین، تاجروں اور دیگر معاشی اداکاروں پر مشتمل ایک ورکنگ گروپ کے قیام کی تجویز پیش کی جس کے ذریعے تجارتی تعاون اور قرضوں کے تصفیے کی حکمت عملی کو وسعت دیں۔

در این اثنا سری لنکن وزیر توانائی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک، ایران کیساتھ تعاون میں توسیع کا خیرمقدم کرتا ہے اور اس راستے میں حائل رکاوٹوں کے باوجود باہمی تجارت کو بڑھانے اور دونوں فریقین کے مفادات کو آگے بڑھانے کیلئے تمام دستیاب صلاحیتوں کو استعمال کرنے میں دلچسپی رکھتا ہے اور اس میدان میں تمام تجاویز اور آپریشنل حل کا خیر مقدم کرتا ہے۔

انہوں نے ایرانی مرکزی بینک کے سربراہ کیجانب سے دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی تعاون میں اضافے کی تجویز کا خیر مقدم کیا۔

ان کے مطابق، سری لنکا مشکل بین الاقوامی حالات میں ایران کے ساتھ کھڑا رہے گا اور اس کے مفادات کی حمایت کرے گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha