ایران کے کان کنی کے ذخائر کی قیمت میں 7 ارب ڈالر کا اضافہ

تہران، ایرنا - ایرانی مائنز اینڈ مائننگ انڈسٹری ڈویلپمنٹ کارپوریشن کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین نے کہا ہے کہ حالیہ برسوں میں کی گئی تلاشوں کے ساتھ ایران کے کان کے ذخائر میں 7 ارب ڈالر کا اضافہ ہوا ہے۔

یہ بات "وجیہ اللہ جعفری" نے جمعرات کے روز اس کمیشن کے سالانہ اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ ملک کے کان کنی کے سامان میں سونے ، لوہے ، تانبے ، سیسہ ، زنک اور کوئلہ شامل ہیں جن کی مالیت تقریبا 39 ارب ڈالر ہے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ  تازہ ترین دریافتوں سے قبل ایران کے معدنی ذخائر کی قیمت 774 ارب ڈالر کے لگ بھگ تھی اور نئے معدنی ذخائر کے ساتھ 1045 ارب ڈالر تک بڑھ گئی ہے۔

جعفری نے کہا کہ پچھلے دو سالوں میں خاص طور پر پسماندہ علاقوں میں 670 سے زائد بارودی سرنگیں فعال یا تیار کی گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس تنظیم رواں سال 1.9 ارب ڈالر کے مختلف منصوبے کھولنے کا منصوبہ بنا رہا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha