جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے اجلاس کا انعقاد ایجنڈے میں نہیں ہے: ایران

تہران، ارنا- ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کے اجلاس کا انعقاد ایجنڈے میں نہیں ہے اور ہم 1+4 فریقین سے باہمی اجلاسوں کا انعقاد کریں گے۔

ان خیالات کا اظہار"سعید خطیب زادہ" نے نیوریارک میں منعقدہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر فرانسیسی وزیر خارجہ کے بیانات پر ردعمل دیتے ہوئے کیا۔

فرانسیسی وزیر خارجہ نے کہا تھا کہ جوہری معاہدے پر مشترکہ اجلاس کا انعقاد ہوجاتا ہے لیکن خطیب زادہ نے کہا کہ پہلے بھی دیگر وزرائے خارجہ نے اس اجلاس کے انعقاد میں دلچسبی کا اظہار کیا تھا۔

ایرانی محکمہ خارجہ نے کہا کہ جوہری معاہدہ ان موضوعات میں سے ایک ہے جن پر یہاں موجود وزرائے خارجہ بحث کریں گے لیکن 1+4 کے ارکان کیساتھ ملاقات ایجنڈے میں شامل نہیں ہے، اور صرف جوہری معاہدے کے ارکان کیساتھ دوطرفہ ملاقات ہوگی۔

واضح رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ "حسین امیر عبداللہیان" نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 76 ویں اجلاس میں حصہ لینے کیلئے کل بروز پیر کو نیویارک کا دورہ کیا۔

انہوں نے نیویارک کی آمد پر اس امید کا اظہار کیا کہ ہم متوازن خارجہ پالیسی اور تیرہویں حکومت کی فعال، متحرک اور ذہین سفارت کاری کے مقاصد یعنی علاقائی اور بین الاقوامی ممالک سے تعلقات کے فروغ کے سلسلے میں اس موقع سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔

امیر عبداللہیان کے مطابق اس چار روزہ دورے کے دوران، ان کے لیے تقریبا 50 ملاقاتیں اور مختلف اجلاسوں میں حصہ لینے میں شرکت کی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha