ایران کی آئی اے ای اے کی صہیونی ریاست کے جوہری بموں سے مالامال اسلحہ خانوں پر دانستہ خاموشی پر تنقید

لندن، ارنا- ویانا کی بین الاقوامی تنظیموں میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے عالمی جوہری ادارے کیجانب سے صہیونی ریاست کے ایٹمی بموں سے مالامال اسلحہ خانوں پر دانستہ خاموشی کی تنقید کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ بین الاقوامی برادری اور عالمی جوہری ادارے  نے پانچ مہینوں سے زائد ہے کہ اس ناجائز ریاست کی جوہری سرگرمیوں پر آنکھیں بند کیں ہیں اور ان سرگرمیوں کی کوئی نگرانی نہیں کی جاتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق، "کاظم غریب آبادی" نے ان اظہارات کو عالمی جوہری ادارے کے بورڈ آف گورنرز کے حالیہ اجلاس میں صہیونی ریاست کے سفیر کو کنایتا کہا جس نے اس بات کا دعوی کیا کہ آئی اے ای اے گزشتہ 7 مہینوں کے دوران (ایرانی پارلیمنٹ میں پابندیوں کی منسوخی پر اسٹریٹجک اقدامات اٹھانے کے قانون کی منظوری کے بعد) ایرانی جوہری سرگرمیوں کی نگرانی نہیں کر رہی رہے۔

ایرانی مندوب نے کہا کہ اس ریاست کے نمائندے کیلئے جن کا ملک جوہری ہتھیاروں کی روک تھام اور اسلحے کنٹرول کے کسی بھی معاہدے کے رکن نہیں ہے، اس بات کا دعوی مضحکہ خیز ہے؛ اگر ایران سے متعلق 7 مہینوں کی بات کی جاتی ہے حالانکہ یہ عوام کو دھوکہ دینا بھی ہے کیونکہ ایران اپنی حفاظت کی ذمہ داریاں پوری کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ لیکن بین الاقوامی برادری اور عالمی جوہری ادارے نے پانچ مہینوں سے زائد ہے کہ اس ناجائز ریاست کی جوہری سرگرمیوں پر آنکھیں بند کیں ہیں اور ان سرگرمیوں کی کوئی نگرانی نہیں کی جاتی ہے اور اس پر مزید افسوس یہ ہے کہ آئی اے ای اے اس حوالے سے دانستہ طور پر خاموشی اختیار کی ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha