حزب اللہ تنظیم کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل کی ایرانی اسپیکر سے ملاقات

تہران،ارنا- لبنانی تنظیم کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل "شیخ نعیم قاسم" اور لبنانی اسپیکر کے خصوصی نمائندے "ایوب حمید" نے ایرانی اسپیکر سے ملاقات اور گفتگو کی۔

رپورٹ کے مطابق، قالیباف نے قابض صہیونی ریاست کیخلاف حزب اللہ کے اہلکاروں کی مزاحمت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اللہ رب العزت کے فضل سے 33 روزہ جنگ جیتنے کے بعد حزب اللہ کی افواج اپنی طاقت کے عروج پر ہیں اور صہیونی دشمن ان مجاہدین کا مقابلہ کرنے سے خوفزدہ ہے۔

اس موقع پر شیخ نعیم قاسم نے لبنان اور فلسطین کے عوام کا اسلامی جمہوریہ ایران کی سپریم لیڈر، قوم اور حکومت کی روحانی مدد اور حمایت پر شکریہ ادا کیا اور نئی حکومت اور اسلامی جمہوریہ ایران کے مقدس نظام میں شامل افراد کے لیے کامیابی اور فخر کی خواہش کی۔

اس ملاقات میں دونوں فریقین نے جنرل قاسم سلیمانی اور مزاحمت کے دیگر شہداء کی یاد تازہ کرتے ہوئے  بنان کی اندرونی تبدیلیوں، صیہونی حکومت کو حزب اللہ کا فیصلہ کن جواب، اسلامی ممالک اور مزاحمتی فرنٹ کیخلاف معاشی جنگ میں امریکہ اور مغرب سے لڑنے کی ضرورت پر تبادلہ خیال کیا۔

نیز قالیباف نے لبنانی پارلیمنٹ کے خصوصی نمائندے سے ایک ملاقات کے دوران، قالیباف نے اقتصادی پابندیوں اور لبنان پر مسلط کردہ بحران کو عوام کے مسائل کی وجہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج امریکہ، کچھ مغربی ممالک اور صیہونی ریاست نے لبنان کے اندرونی، معاشی مسائل اور اختلاف رائے کو لوگوں پر دباؤ بڑھانے کے لیے ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کیا ہے جس پر میں سوچنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے 33 روزہ جنگ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ لبنان نے ظاہر کیا ہے کہ وہ صیہونی حکومت کیخلاف مضبوطی سے کھڑا ہے اورصہیونی ریاست جنگ ختم کرنے یا جاری رکھنے کے لیے حتمی فیصلے کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتی۔

در این اثنا ایوب حمید نے کہا کہ کچھ گروہ، مزاحمت کی مذہبی سرگرمیوں اور لبنانی دشمنوں کی شرارتوں میں فرق کرنے کی طاقت نہیں رکھتے اور دشمن اس اختلاف رائے کو اپنے حق میں فائدہ اٹھاتا ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ لبنانی پارلیمنٹ کے اسپیکر پارلیمانی تعامل کو گہرا کرنے کو خصوصی اہمیت دیتے ہیں؛ پارلیمانی بات چیت سے دونوں ممالک کی حکومتوں کے درمیان تعلقات مضبوط ہوں گے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha