5 اگست، 2021 3:34 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 84427635
0 Persons
ہم ایک مضبوط اور طاقتور عراق کے خواہاں ہیں: ایرانی صدر

تہران، ارنا- ایرانی صدر نے اپنے عراقی ہم منصب سے ایک ملاقات کے دوران، دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کی سطح میں اضافے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ قائد اسلامی انقلاب کے مطابق ہم ایک مضبوط اور طاقتور عراق کے خواہاں ہیں۔

علامہ سید ابراہیم رئیسی نے آج بروز جمعرات کو برہم صالح سے ایک ملاقات کے دوران، اس امید کا اظہار کرلیا کہ عراق میں ہونے والے انتخابات، عزیز عراقی عوام کے وقار اور ان کی مرضی کو پورا کرنے کیلئے ایک پلیٹ فارم ثابت ہوں گے۔

انہوں نے عراق کی عزت اور وقار کی سمت اٹھائے گئے ہر کسی بھی قدم اور اس ملک سے اغیار کی مداخلت سے نمٹنے کو عراقی کی پیشرفت کیلئے اہم قرار دے دیا اور کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے عراق کی قومی سالیمت کے تحفظ اور اس ملک میں قیام امن او سلامتی کیلئے کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کی ہے اور اس راستے میں شہید جنرل سلیمانی کی شہادت جیسی بڑی قربانیاں دی ہیں۔

ایرانی صدر نے زائرین کربلا اور اربعین مارچ کیلئے سہولیات کی فراہمی اور اس حوالے سے خرمشہر- بصرہ ریلوے لائن کا جلد از جلد نفاذ کی ضرورت پر زور دیا۔

اس موقع پر عراقی صدر نے کہا کہ ڈکٹیٹر صدام حسین کی ایک طویل اور جلتی ہوئی جنگ بھی ایران اور عراق کی دو قوموں کے درمیان گہرے اور مخلص تعلقات میں خلل نہیں ڈال سکی۔

انہوں نے کہا کہ صدام کی آمریت کے خاتمے کے بعد دو طرفہ تعلقات میں نمایاں پیشرفت کے باوجود، تعلقات میں توسیع کے کافی امکانات موجود ہیں۔

برہم صالح نے خطے میں سیکورٹی انتظامات کو نئے سرے سے متعین کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایک آزاد اور طاقتور ایران اور عراق کی موجودگی کے بغیر خطے میں جامع استحکام اور سلامتی کا قیام ممکن نہیں ہے؛ پورے عراق پر ایک مکمل خودمختاری رکھنے والا عراق، خطے میں سیکورٹی انتظامات میں بہت تعمیری کردار ادا کرسکتا ہے۔

عراقی صدر نے اسلامی جمہوریہ ایران کیجانب سے عراق کی قومی سالیمت کے تحفط و نیز دہشتگردی کیخلاف جنگ میں عراق کی حمایت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ تاریخ کی یادداشت میں درج ہوگی کہ ایران مشکل حالات میں عراق کیساتھ شانہ بشانہ کھڑا رہا۔

واضح رہے کہ عراقی صدر برہم صالح ایران کے نئے صدر کی تقریب حلف برداری میں حصہ لینے کیلئے آج کی صبح کو دورہ تہران پہنچ گئے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha