افریقی ممالک سے تعلقات کی توسیع نئی ایرانی حکومت کی ترجیحات میں ہے: علامہ رئیسی

تہران، ارنا- علامہ رئیسی نے کہا کہ ایرانی اور نائیجر قوموں کے مشترکہ عقائد ہمارے دلوں کو قریب لاتے ہیں اور نائیجر سمیت افریقی ممالک کیساتھ تعلقات کا فروغ نئی ایرانی حکومت کی ترجیحات میں ہے۔

ان خیالات کا اظہار علامہ سید ابراہیم رئیسی نے بدھ کی رات نائیجر پارلیمنٹ کے اسپیکر "سینی عمرو" کیساتھ ایک ملاقات کے دوران، گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی انقلاب کی فتح کے بعد دونوں ممالک کے درمیان تعلقاتب دستور دوستانہ رہے ہیں اور وہ جو سیاسی اور اقتصادی تعلقات سے زیادہ ایران اور نائجیر کو ایک دوسرے سے جوڑتے ہیں وہ ہماری قوموں کے مشترکہ عقائد ہیں جو ہمارے دلوں کو اکھٹا کرتے ہیں۔

ایرانی صدر نے دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کی حالیہ سطح کو غیر قابل قبول قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور نائیجر کی وزارت خارجہ کو ایک آپریشنل پلان اور میکانزم کو ڈیزائن اور نافذ کرنا ہوگا تاکہ تعلقات کو بڑھانے کیلئے دونوں ممالک کی صلاحیتوں کی نشاندہی کی جاسکے، کیونکہ نائیجر سمیت افریقی ممالک کیساتھ تعلقات کو وسعت دینا ایران کی ترجیحات میں سے ایک ہے۔

علامہ رئیسی نے باہمی تعلقات بڑھانے میں پارلیمانی تعلقات کردار پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران اور نائیجر کے درمیان اچھے تعلقات بین الاقوامی میدان میں دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مضبوط بنانے کی بنیاد ہونی ہوگی۔

دراین اثنا سینی عمرو نے نائیجرکے صدر اور عوام کیجانب سے ایرانی حکومت اور عوام کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں نائیجر عوام او حکومت کیجانب سے دوستی اور اچھے تعلقات بڑھانے کا پیغام لے کے آیا ہوں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha