باقی دیکر غیر ملکی افواج کو جلد از جلد از شام سے نکلنا ہوگا: ایرانی صدر

تہران، ارنا- ایرانی صدر نے کہا کہ شام میں مزاحمت کرنے والے عوام اور ایک انقلابی حکومت ہے اور شامی عوام اور حکومت نے عبرانی اور مغربی دہشتگردی کا بہادری سے مقابلہ کیا اور فتح حاصل کی۔

ان خیالات کا اظہار علامہ "سید ابراہیم رئیسی" نے آج بروز بدھ کو ایران کے دورے پر آئے ہوئے "حمودہ صباغ" سے ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ تہران اور دمشق کے درمیان سیاسی اور اقتصادی تعلقات کی توسیع، دونوں ممالک کے مفادات کے سلسلے میں ہے لہذا ہم اس راستے کا جاری رکھیں گے اور دونوں دوست اور برادر ممالک کے تعلقات کی توسیع کی راہ میں کسی بھی قسم کی رکاوٹ نہیں ہے۔

علامہ رئیسی نے شام کی تعمیر نو کی منصوبہ بندی سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دیگر غیر ملکی افواج کو بھی جلد از جلد شام سے نکلنا ہوگا تا کہ شامی عوام پوری طاقت سے اپنے ملک کی بحالی کے عمل کا آغاز کریں۔

ایرانی صدر نے دشتگردوں کیخلاف مزاحمتی فرنٹ کے شہدا بالخصوص جنرل سلیمانی کی قربانیوں کو سراہا۔

اس موقع پر حمودہ صباغ نے کہا کہ شامی حکومت اور عوام ہرگز ایرانی عوام کی حمایتوں کو نہیں بھولیں گے اور جنرل سلیمانی کی یاد ہمیشہ عوام کی دل و جان میں رہے گی۔

انہوں نے کہا کہ ایران اور شام کی ایک مشترکہ تقدیر ہے؛ شام اور ایران کے لوگوں کا خون ملا ہوا ہے اور دونوں قوموں کے درمیان لازوال تعلقات ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha