پاک ایران تجارتی لین دین میں آسانی لانے سے سرحدی پاشندوں کی معاشی صورتحال میں بہتری آئے گی

تہران، ارنا- ایرانی اسپیکر نے پاکستانی سینیٹ کے چیئرمین سے ایک ملاقات کے دوران، ہمسایہ ممالک سے تعلقات کے فروغ کو ایران کی ترجیحات میں قرار دیتے ہوئے کہا کہ پاک ایران تجارتی لین دین میں آسانی لانے سے سرحدی پاشندوں کی معاشی صورتحال میں بہتری آئے گی۔

"محمد باقر قالیباف" نے آج بروز بدھ کو ایران کے دورے پر آئے ہوئے "محمد صادق سنجرانی" سے ملاقات اور گفتگو کی۔

اس موقع پر قالیباف نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی ترجیح، ہمسایہ ممالک سے تعلقات کا فروغ ہے لہذا پاکستان سے تعلقات ہمارے لیئے انتہائی اہم ہے۔

انہوں نے دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی اور اقتصادی تعلقات کی تقویت کی صلاحیتوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ پاک ایران تجارتی لین دین میں آسانی لانے سے سرحدی پاشندوں کی معاشی صورتحال میں بہتری آئے گی۔

قالیباف نے بطور ایران اور پاکستان کے ہمسایہ ملک کے افغانستان کی حالیہ صورتحال پر خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ  افغانستان میں قیام امن اور سلامتی ایران کی ترجیحات میں ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ افغان انٹرا ڈائیلاگ کی ترقی میں تمام خطی ممالک کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانا ہوگا۔

دراین اثنا "محمد صادق سنجرانی" نے دونوں ملکوں کے درمیان تعاون کی تاریخ پر تبصرہ کرتے ہوئے ایران اور پاکستان کے مذہبی، تاریخی، ثقافتی اورعلاقائی مشترکات کو باہمی تعلقات کی مضبوط بنانے کا اہم عنصر قرار دے دیا۔

انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران کیجانب سے دنیا کے کسی بھی کونے میں رہنےوالے مظلوم مسلمانوں کی حمایت کا سلسلہ جاری رکھنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستانی حکومت اور عوام، قائد اسلامی انقلاب اور ایرانی حکومت کیجانب سے مظلوم کشمیری عوام کی حمایت کے مشکور ہیں۔

پاکستانی سینیٹ کے چیئرمین نے سرحدی بازاوں اور اقتصادی تعلقات کی تقویت پر ایرانی اسپیکر کے بیانات سے اتفاق کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک باہمی تعاون کی تقویت کی ہر کسی حکمت عملی کا خیر مقدم کرے گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha