شام کی پوزیشن ایرانی تجارت کیلئے ایک بے بدیل اور غیر معمولی موقع ہے

تہران، ارنا- ایرانی اسپیکر نے اس بات پر زور دیا کہ شام کی پوزیشن ایرانی تجارت کیلئے ایک غیر معمولی موقع ہے؛ شام، یورپ اور بحیرہ روم کے بازاروں میں داخل ہونے کیلئے ہمارا قریب ترین خطہ ہے اور صنعتی، زرعی، سیاحتی اور تیل کے شعبوں میں تعاون کی صلاحیتوں کے استعمال کیلئے بہت سارے مواقع فراہم کرتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "محمد باقر قالیباف" نے منگل کے روز دورہ شام کی روانگی سے پہلے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ دورہ، شام کے دوست اور برادر ملک کی سرکاری دعوت پر مبنی ہے جس میں اس ملک کے اعلی عہدیداروں سے باہمی دلچسبی امور سمیت علاقائی اور بین الاقوامی معاشی تعاون سے بات چیت اور مشاورت کی جاتی ہے۔

قالیباف نے "بشار اسد" کو شام کے صدارتی انتخابات میں فتح پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ دورہ، کامیاب انتخابات کے بعد اور شامی عوام کی بڑے پیمانے پر شرکت اور صدر بشار الاسد کی نئی سات سالہ دوران صدرات کے آغاز کیساتھ ہوا اور یہ معاشی، سیاسی اور ثقافتی میدان میں بھی بات چیت اور مشاورت کے سلسلے میں ہے اور دونوں ملکوں کیلئے ایک بہت اچھا موقع ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج؛ شام میں عسکری اور سلامتی کی صورتحال کے ساتھ ساتھ دہشتگرد گروہوں اور داعش کی طرف سے لاحق خطرات بھی ختم ہوچکے ہیں، اور یہ ملک معاشی ترقی کی راہ پر گامزن ہے؛ لہذا معاشی میدان میں دونوں ملکوں کے نجی اور سرکاری شعبوں کے درمیان تجارتی سرگرمیوں کے فروغ کا بہت اچھا موقع ہے۔

قالیباف نے کہا وہ دورہ شام کے موقع پر ایرانی اور شامی تاجروں سے بھی ملاقاتیں کریں گے اور دونوں ممالک کے چیمبر آف کامرس کے فریم ورک کے اندر تفصیلی ملاقاتیں طے کی گئی ہیں، جس میں اسلامی جمہوریہ ایران اور شامی حکومت جامع تعاون کے معاہدے کے تحت سنجیدہ مذاکرات شامل ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ یقینا ، اس معاہدے کو مستقبل قریب میں اسلامی مشاورتی اسمبلی کے ساتھ ساتھ شامی اسمبلی کے ذریعے بھی منظور کرلیا جائے گا اور مجھے امید ہے کہ یہ دورہ، سمندری اور زمینی راستوں کے ذریعے ہمارے تاجروں کی معاشی صلاحیتوں کو استعمال کرنے کا موقع فراہم کرے گا۔

**9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha