22 جولائی، 2021 3:54 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 84413107
0 Persons
جاسک ٹرمنیل سے تیل کی برآمدات کے عمل کا آغاز کیا گیا

تہران، ارنا- گورہ- جاسک قومی اسٹرٹیجک منصوبے کا آج بروز جمعرات کو صدر روحانی کی ہدایت سے نفاذ کیا گیا اور پہلی بار کیلئے جاسک ٹرمنیل سے تیل کو برآمد کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق، جاسک ٹرمینل سے خام تیل کی پہلی کھیپ لوڈ اور برآمد کرنے کا سرکاری عمل آج (جمعرات، 22 جولائی) کو صدر روحانی کی ہدایت سے آغاز کیا گیا اور ملک کے تیل برآمدی اڈوں کو متنوع بنانے کا دیرینہ مقصد حاصل کیا گیا۔

گورہ سے جاسک  تک خام تیل کی منتقلی کے منصوبے پر عمل درآمد تقریبا 2 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی منظوری کیساتھ ہے جس کا مقصد روزانہ 10 لاکھ بیرل خام تیل پیدا کرنا ہے اور اسے نئے جاسک ٹرمینل کے ذریعے اسٹور اور ایکسپورٹ، مکران کے ساحل پر تیل کی برآمدات کا تسلس ، برآمدی  ٹرمینل کی تنوع کو یقینی بنانا، پائیدار ترقی اور روز گار کے مواقع کی فراہمی میں اضافہ کرنے کا ہے۔

اب تک 300 ہزار بیرل تیل (روزانہ) کی گنجائش پیدا ہوچکی ہے اور مستقبل قریب میں یہ صلاحیت آہستہ آہستہ روزانہ دس لاکھ بیرل تک پہنچ جائے گی۔

ملکی پیداوار میں 90 فیصد سے زیادہ حصہ اور ایرانی ٹھیکیداروں اور معماروں کی طاقت کا زیادہ سے زیادہ استعمال اس قومی منصوبے کی سب سے اہم خصوصیات ہیں یہاں تک کہ 250 ٹھیکیداروں اور ملکی صنعت کاروں نے اس کے نفاذ میں حصہ لیا ہے اور ملکی صلاحیتوں پر انحصار کرتے ہوئے، اس منصوبے کے لئے درکار کچھ سامان اور سامان پہلی بار ملک میں تعمیر کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ گورہ سے جاسک تک خام تیل کی منتقلی کی لائن، تاریخ میں پہلی بار، ہمارے ملک کی تیل برآمدات کو آبنائے ہرمز سے گرزنے کی ضرورت کے بغیر قابل بناتی ہے  جس میں پہلے مرحلے میں روزانہ 300 ہزار بیرل خام تیل کی ترسیل کی گنجائش موجود ہے۔

ایران کیخلاف امریکی جابرانہ پابندیوں کی وجہ سے اس پائپ لائن کی تعمیر کیلئے پہلی بار  ملک کے ماہرین نے ایک ہزار کلومیٹر سنکنرن سے بچنے والی پائپیں تعمیر کی ہیں۔

نیز ھٹا سروس کیساتھ مطابقت پذیر 2.5 میگاواٹ کے بڑے پمپوں کو ملک میں پہلی بار بنایا گیا اور اس پائپ لائن میں استعمال کیا گیا ہے۔

اس ٹرانسمیشن لائن کی تعمیر کے دوران، ایرانی ماہرین نے مکران کے ساحل پر خام تیل لوڈ کرنے کیلئے ایکسپورٹ ٹرمینل اور ایک تیرتی گیند بنائی اور 5 بشار ، فارس، ہرمزگان کے صوبوں اور  صوبے ہرمزگان کے بستاک اور میناب کے شہروں میں بھی 2 آرٹلری اسٹیشن بنائے گئے ہیں۔

اس پائپ لائن کی تعمیر کیلئے مجموعی طور پر 53 ہزار ارب تومان (ایرانی قومی کرنسی) کی سرمایہ کاری کی گئی ہے اور اس کے با ضابطہ نفاذ سے 10 ہزار افراد کیلئے روزگار کی فراہمی ہوگی۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha