اسلامی نشریاتی یونین کی امریکہ کے دوہرے معیار پر تنقید

تہران، ارنا- اسلامی نشریاتی یونین نے امریکی محکمہ انصاف کی جانب سے بعض ویب سائٹوں پر پابندی کی مذمت کی۔

اسلامی نشریاتی یونین نے ایک بیان میں کہا ہے کہ امریکی محکمہ انصاف نے اسلامی نشریاتی یونین کے کچھ ممبران کے نیٹ ورکوں کی ویب سائٹس کو جھوٹے بہانے پر غیر دستیاب بنا کر بلاک کردیا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ امریکی دہشتگردانہ پالیسیوں کا مقابلہ کرنے میں سب سے آگے ہونا فخر کی بات ہے اور یہ محدود مالی وسائل کے باوجود مظلوم اقوام اور فلسطین کے مسئلے کی حمایت اور اقوام عالم میں بیداری پیدا کرنے میں یونین کے میڈیا اداروں کے فعال اور موثر کردار کا بہترین اشارہ ہے۔

لہذا ہم اس غیر اخلاقی فعل اور سائبر اسپیس میں موجود ہونے کے حق کی خلاف ورزی کی مذمت  کرتے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ امریکی حکومت کی طرف سے لفظ کا لفظ ، دلیل کیلئے دلیل اور شبیہہ کیلئے شبیہہ کا مقابلہ کرنے سے قاصر ہونے کی علامت ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی سیاستدان ایسی سائٹوں اور نیٹ ورکس سے سچائی پھیلانے کی برداشت نہیں کرتے ہیں جو دنیا میں ان کے بدصورت چہرے کو بے نقاب کرتے ہیں اور خطے سے ان کے ہاتھ کاٹ دیتے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ آزادی  فکر اور انسانی حقوق کے بہانے کے تحت دنیا میں اپنی مداخلتوں کا جواز پیش کرتا ہے اور مختلف ممالک اور اداروں پر دباؤ اور پابندیاں عائد کرتا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ امریکہ دوسروں کا منہ بند کر نے، آزاد خیال آوازوں کو دبانے اور خود تحریری قوانین اور جمہوریت کی خلاف ورزیوں پر بھروسہ کرکے اپنے جرائم کو قانونی حیثیت دینا چاہتا ہے۔

واضح رہے کہ امریکی محکمہ انصاف نے حالیہ دنوں میں امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی کے الزام میں ایران کے اسلامی نشریاتی یونین کے زیر استعمال 33 ویب سائٹوں اور کاتب حزب اللہ گروپ کی تین ویب سائٹوں پر پابندی عائد کردی ہے۔

پریس ٹی وی کے تین ڈومینز، العالم ٹی وی اور المسیرا ٹی وی پر "اس ویب سائٹ پر پابندی عائد کردی گئی ہے" کا جملہ ظاہر ہوا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان "ند پرایس" نے اس حوالے سے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پریس ٹی وی اور دیگر ذرائع ابلاغ  کیخلاف پابندی سے متعلق واشنگٹن کے پاس کہنے کی کوئی بات نہیں ہے لیکن ممکن ہے کہ امریکی محکمہ انصاف اس حوالے سے معلومات کی فراہمی کرے۔

 اس حوالے سے اقوام متحدہ میں تعینات ایک ایرانی عہدیدار نے امریکہ کیجانب سے ایرانی ویب سائٹوں پر پابندی کو غیرقانونی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم اس مسئلے کا قانونی طریقوں سے تعاقب کریں گے۔

اس ایرانی سفارتکار نے امریکہ کے اس جبری اور غیرقانونی اقدام کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدام "اظہار رائے کی آزادی" کو محدود کرنے کے سلسلے میں اٹھایا گیا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha