ایرانی سپریم لیڈر نے صدارتی انتخابات میں اپنا ووٹ ڈال دیا

تہران - ارنا – ایرانی سپریم لیڈر حضرت آیت اللہ العظمی 'سید علی خامنہ ای' نے جمعہ کے روز 13ویں صدارتی انتخابات کے آغاز میں اپنا حق رائے دہی استعمال کیا.

قائد اسلامی انقلاب آیت اللہ خامنہ ای نے آج بروز جمعہ تہران کے پولنگ اسٹیشن نمبر 110 میں 13ویں صدارتی انتخابات اور 6 ویں دیہی-شہری اسلامی کونسلز الیکشن کے لئے اپنا ووٹ ڈال دیا.

یاد رہے کہ آج بروز جمعہ اسلامی جمہوریہ ایران میں 13ویں صدارتی انتخابات اور 6 ویں شہری،دیہی اسلامی کونسلز (لوکل باڈیز) کے انتخابات کے لئے ووٹ ڈالے جائیں گے اور اسی دن چار پارلیمانی حلقوں میں ضمنی انتخابات کا انعقاد ہورہا ہے.

 59 ملین اور 310ہزار ووٹر 13 ویں صدارتي انتخابات اور6 ویں شہري،ديہي اسلامي كونسلز (لوكل باڈيز) كے انتخابات كے لئے 59 ملین سے زیادہ افراد ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں اور اہل ووٹرز میں سے ایک ملین اور 392 ہزار  اور148 افراد پہلی بار کے لیے ووٹ دیں گے۔

صدارتی انتخابات کے لیے 67 ہزار سے زیادہ بیلٹ باکسز، شہري،ديہي اسلامي كونسلز (لوكل باڈيز) كے لیے 75 ہزار بیلٹ باکسز تیار کیے ہیں  اور پوری دنیا میں 450 ہزار بیلٹ باکسز کا قیام کیا گیا ہے۔

59 ملین اور 310 ہزار اور 307 مرد اور 29 ملین 980 ہزار 38 خواتین ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں۔ایک ملین اور 392 ہزار  اور148 افراد پہلی بار کے لیے ووٹ دیں گے جن میں سے 706 ہزار مرد اور باقی خواتین ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ دنیا کے 226 ذرائع سے تعلق رکھنے والے 500 غیر ملکی صحافی ایران میں ہونے والے 13 ویں صدارتی انتخابات اور شہری-دیہی اسلامی کونسلز کے چٹھے الیکشن کو کوریج دیں گے۔

خیال رہے کہ ایران گارڈین کونسل نے ہونے والے صدارتی انتخابات کیلئے سات امیدوارں کے ناموں کو 25 مئی کو منظوری دے دی؛ جن میں ایرانی عدلیہ کے سربراہ "ابراہیم رئیسی"، جوہری پروگرام کے سابق مذاکرات کار "سعید جلیلی"، پاسداران انقلاب فورسز کے سابق کمانڈر "محسن رضائی"، سابق رکن پارلیمان "علی رضا زاکانی"، موجودہ رکن پارلیمان "امیر حسین قاضی زادہ ہاشمی"، سابق ریاستی گورنر "محسن مہر علی زادہ" اور ایران کے مرکزی بینک کے موجودہ سربراہ "عبد الناصر ہمتی" کے نام شامل ہیں۔ جن میں سے تین امیداور علی رضا زاکانی، سعید جلیلی اور  محسن مہر علی زادہ" صدارتی انتخابات سے دستبردار ہوگئے ہیں۔

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha