ایران اور بھارت کے درمیان ٹکنالوجی کی منتقلی اور ویکسیں کی مشترکہ تیاری کیلئے باہمی تعاون

تہران، ارنا - پاستور انسٹی ٹیوٹ آف ایران اور بھارتی کمپنی بھارت بایوٹیک کے مابین طے پانے والے معاہدے کے مطابق ، دونوں فریق روٹا وائرس ویکسین تیار کرنے کی ٹکنالوجی کو ملک میں منتقل کرنے اور اس ویکسین کی گھریلو پیداوار کیلیے تعاون کریں گے۔

گزشتہ روز ویکسین تیار کرنے والے دو بڑے اداروں 'پاستور انسٹی ٹیوٹ آف ایران اور بھارتی کمپنی بھارت بایوٹیک' کے سربراہان کی موجودگی میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران روٹا وائرس ویکسین کی فراہمی کے لئے ایک معاہدہ کیا گیا۔

نئی دہلی میں ایرانی سفارتخانے کی رپورٹ کے مطابق ، اس ویبنار کے دوران جس میں دونوں فیکٹریوں ممالک کے سربراہوں کے ساتھ ساتھ دونوں ممالک کے سفیروں اور دونوں ممالک کے وزارت خارجہ کے عہدیداروں نے شرکت کی  تھی، دونوں فریقین نے ویکسین کی تیاری اور صحت کے شعبے میں باہمی تعاون کے لیے اپنی دلچسپی کا اظہار کیا۔

نائب ایرانی وزیر صحت محسن اسدی لاری نے کورونا پھیلنے سے نمٹنے کے لئے باہمی تعاون کی سہولیات کی فراہمی اور گھریلو ضروریات کو پورا کرنے روس اور چین خاص طور پر بھارت میں تعینات ایرانی سفیرون کی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ بہارات کمپنی کے ساتھ تعاون صرف روٹا وائرس ویکسین تک ہی محدود نہیں ہے اور یہ دوسرے شعبوں میں بھی پھیل جائے گی۔

بھارت میں تعینات ایرانی  سفیر علی چگنی نے بھارتی کمپنی بھارت بایوٹیک کے دورے کے دوران اس کمپنی کی صلاحیتوں کی تعریف کرتے ہوئے ویکسین کی مشترکہ پیداوار کے لئے دونوں ممالک کے مابین تعاون کو مضبوط بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔

 انہوں نے یہ امید بھی ظاہر کی کہ جلد از جلد بھارتی کمپنی کے ذریعہ تیار کردہ باقی کورونا ویکسینز ہمارے ملک بھیجی جائیں گی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha