ایران پابندیوں کی پچھلی صورتحال کی سطح تک تیل کی پیداوار پر تیار ہے

تہران، ارنا- ایران نیشنل آئل کمپنی کے ڈائریکٹر برائے پیداوار کے امور نے کہا ہے کہ ایک ہفتے، ایک مہینے اور تین مہینوں کے مرحلوں میں تیل کی پیداوار کو پابندیوں کی پچھلی صورتحال کی سطح تک پہنچنے کی سنجیدہ منصوبہ بندی کی گئی ہے اور اگر پابندیاں ختم کردی جائیں تو ملک کے بیشتر تیل کی پیداوار ایک ماہ کے اندر بحال ہوجائے گی۔

"فرخ علیخانی" نے بدھ کے روز گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایران کیخلاف دوبارہ پابندیاں عائد کرنے اور پیداوار پر قابو پانے کے سنیرے سمیت پیداوار کی بحالی کے سنیرے کو مرتب کرنا بھی ایجنڈے میں شامل ہوگئے اور ایک ہفتے، ایک مہینے اور تین مہینے کے مرحلوں میں تیل کی پیداوار کو پابندیوں کے پچھلے کی صورتحال کی سطح تک پہنچنے کی سنجیدہ منصوبہ بندی کی گئی ہے

انہوں نے کہا کہ اگرچہ ہم نے تین مہینوں کے اندر پیداوار کی مکمل طور پر بحال کرنے کیلئے درکار وقت کا تخمینہ لگایا ہے لیکن منصوبہ بندیوں کے مطابق ہم ایک ماہ کے اندر اپنے زیادہ تر مقاصد کو پوری کرنے کی توقع رکھتے ہیں۔

علیخانی نے کہا کہ ہم ہمیشہ پوری طرح تیار رہنے کا عقیدہ رکھتے ہیں تاکہ جب بھی تیل کی زیادہ سے زیادہ پیداوار کا مطالبہ کیا جاسکے ہم کم سے کم وقت میں پیداوار کی بحالی کرسکیں۔

انہوں نے کہا کہ جوہری معاہدے کے بعد ایران میں یومیہ 3 ملین 380 ہزار بیرل خام تیل کی پیداوار ہوجاتی ہے اور اگر ایران کیخلاف پابندیوں کی منسوخی ہوجائے تو ہم پہلے مرحلے میں اس کی مقدار کو یومیہ 4 ملین بیرل تک پہنچ سکتے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha