پابندیوں کی حقیقی منسوخی ایران کی حتمی پالیسی ہے

تہران، ارنا- ایرانی پارلیمنٹ کے 200 اراکین نے ویانا جوہری مذاکرات سے متعلق ایک بیان میں کہا ہے کہ ایران کیجانب سے اپنے جوہری وعدوں پر مکمل عمل درآمد کی بنیادی شرط، پابندیوں کی حقیقی منسوخی اور ان کی توثیق ہے۔

ایرانی پارلیمنٹ کے اراکین نے ویانا جوہری مذاکرات کے موقع پر منگل کے روز ایک بیان میں جمہوریہ اسلامی ایران کی اس پالیسی پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران کی اپنے جوہری عہدوں پر عمل پیرا ہونے کی اصل شرط "تمام پابندیوں کی منسوخی اور اس کی تصدیق" ہے اور ایران اور دیگر ممبر ممالک کے مابین کسی بھی مکالمے کے نتائج کو جانچنے اور قبول کرنے کا معیار ایرانی عوام کا حقیقی معاشی فائدہ ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ایرانی پارلیمنٹ، پابندیوں کی کسی بھی قسم کی علیحدگی قبول نہیں کرتی ہے جو ایرانی عوام پر اقتصادی دباؤ کا ایک حصہ برقرار رکھے اور معاشی فوائد کو روکے یا اس میں خلل ڈالے اور وہ امریکی پابندیوں کی مکمل منسوخی کا مطالبہ کرتی ہے۔

 بیان میں کہا ہے کہ ایرانی پارلیمنٹ کا عقیدہ ہے کہ اگر 100 فیصد پابندیاں ختم نہیں کی جائیں تو کوئی پابندیاں نہیں اٹھائی جائیں گی اور کچھ پابندیوں کی منظوری سے ان پابندیوں کے جواز کی تصدیق ہوگی۔

ایرانی پارلیمنٹ کے اراکین نے اس بات پر زور دیا کہ پارلیمنٹ کے آرٹیکل نمبر 7 یعنی "ایرانی قوم کے مفادات کی فراہمی کے سلسلے میں اسٹریٹجک اقدامات اٹھانے" کے قانون کے مطابق، وہ بڑی سنجیدگی سے اس عمل کی نگرانی کریں گے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ویانا اجلاسوں سے پتہ چلتا ہے کہ امریکہ اور یورپ نہ صرف تمام پابندیوں کو ختم کرنے کی سنجیدہ خواہش رکھتے ہیں بلکہ وہ ایران کیساتھ ایسا معاہدہ کرنے کی کوشش بھی کرتے ہیں جو ایٹمی سرگرمیوں پر مزید پابندیاں عائد کرے اور علاقائی اور دفاعی مذاکرات کی راہ ہموار کرے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha