ایران میں کانوں سے تانبے نکالنے کی سالانہ گنجائش 100 ملین ٹن ہے

تہران، ارنا- نائب ایرانی وزیر برائے تجارت، صنعت اور کان کنی کے امور نے کہا ہے کہ ملک میں مجموعی طور پر225 تانبے کی کان ہیں جن میں سے 148 فعال ہے اور ان سے تانبے نکالنے کی سالانہ گنجائش 100 ملین ٹن ہے۔

ان خیالات کا اظہار "اسداللہ کشاورز" نے اتوار کے روز گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ مہینوں کے دوران، عالمی مارکیٹ میں تابنے کی قیمت میں اضافے کی وجہ سے گزشتہ 20 سال سے غیر فعال تانبے کی کانوں کی بحالی ہوگئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ توقع کی جاتی ہے کہ 2025ء تک تانبے کی عالمی قیمت 15 ہزار ڈالر تک پہنچ جائے گی جس کی وجہ سے اس صنعت میں رونقیں بڑھنے کا امید ہے۔

کشاورز نے کہا کہ ملک میں اس وقت 4 تانبے کیتھوڈ یونٹ ہیں جن کی گنجائش 12 ہزار ٹن ہے۔

ماہرین کا عقیدہ ہے کہ اگلے 10 سالوں میں، دنیا بھر میں کم از کم 35 فیصد کاروں کو بجلی بنایا جائے گا، جس کی وجہ سے آج کی گاڑیوں میں چار سے سات کلوگرام تانبے کی کھپت 89 کلوگرام سے زیادہ ہوجائے گی؛ اس کی بنیاد پر تانبے کی دھات کیلئے ایک بہت ہی مناسب مارکیٹ تیار کی جائے گی۔

واضح رہے کہ دنیا میں تانبے کی موجودہ فی کس کھپت 3.2 کلوگرام ہے اور توقع کی جاتی ہے کہ اگلے دو دہائیوں میں دنیا میں 1.3 بلین افراد کے اضافے کیساتھ اس میں مزید 5 ملین ٹن کا اضافہ ہوگا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha