طاقت کا توازن فلسطین کے حق میں بدل گیا ہے: ایرانی سپہ سالار

تہران، ارنا- ایرانی مسلح افواج کے سربراہ نے ایک پیغام میں صہیونی ریاست کے حالیہ جرائم کی مذمت کرتے ہوئے فلسطینی مسئلے کے حل میں ایک طاقتور اسٹرٹیجک اتحاد کے قیام کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ قابض صہیونی ریاست، مزاحمتی فرنٹ کے غصے کی آگ میں جل جائے گی۔

میجر جنرل "محمد باقری" نے مسجد الاقصی اور فلسطینی سرزمین کے دیگر علاقوں کیخلاف صہیونی ریاست کے حملوں میں نہتے فلسطینی شہریوں کی شہادت کی مذمت کرتے ہوئے فلسطینی مسئلے کے حل میں ایک طاقتور اسٹریٹجک اتحاد کے قیام کی ضرورت پر زور دیا

جنرل باقری نے اپنے پیغام میں مزید کہا کہ حالیہ دنوں میں ظالم اور بچوں کا قتل کرنے والی ناجائز صہیونی ریاست کے جرائم کے نتیجے میں مظلوم، نہتے اور روزہ دار شہریوں کی شہادت کی وجہ سے پوری دنیا بالخصوص امت مسلمہ کے درمیان غم کی لہر پھیل گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست کے سفاکانہ اقدامات سے فلسطینی قوم کے درمیان اتحاد مزید بڑھ جائے گا اور وہ حتمی فتح کیلئے اپنی مزاحمت پر مزید مطمئن ہوں گے۔

ایرانی سپہ سالار نے کہا کہ اس وقت، مسلم ممالک اور فلسطین کے مظلوم عوام، غاصب اور بچوں کی ہلاکت کرنے والی ریاست کیساتھ تعلقات کو معمول پر لانے میں کچھ عرب ریاستوں کے بدنیتی اور غداری کو کبھی فراموش نہیں کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ سرزمین فلسطین پر قبضہ اور مظلوم فلسطینیوں کے قتل عام کے 73 سال گزرنے کے بعد القدس کا انتفاضہ پہلے کے مقابلے میں زیادہ جذباتی، پرجوش اور طاقتور ہوتا جارہا ہے۔

جنرل باقری نے کہا کہ صہیونی ظالموں اور قاتلوں کی غلاظت سے پاک سرزمین فلسطین کی صفائی سے فلسطینی عوام، حتمی فتح کو حاصل کریں گے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ مزاحمت اور انتفاضہ کی روشنی میں اور ناجائز صہیونی ریاست کیخلاف مزاحمتی فرنٹ کے مسلسل میزائل حملوں کی وجہ سے اب طاقت کا توازن فلسطین کے حق میں بدل گیا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha