پاک-ایران باضابطہ سرحدی بازاروں کا اگلے مہینوں میں افتتاح کیا جائے گا: عمران خان

اسلام آباد، ارنا- پاکستانی وزیراعظم نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلام آباد، پاک-ایران مشترکہ سرحدوں میں قانونی تجارت کی توسیع کیلئے پوری کوشش کرے گا اور اگلے چند مہینوں میں مشترکہ سرحدوں بازاروں کا باضابطہ افتتاح کیا جائے گا۔

ان خیالات کا اظہار، "عمران خان" نے آج بروز منگل کو پی ٹی وی نیوز چینیل سے اندروں ملک سمیت اوورسیز پاکستانیوں سے براہ براست خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر انہوں نے ایران سے ملحقہ سرحدی صوبے بلوچستان کی توسیع کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران سے مشترکہ سرحدوں کا باڑلگانے سے قانونی تجارت کے فروغ سمیت اسمگلنگ کی روک تھام ہوگی۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ اسمگلنگ کی روک تھام، ہماری ترجحیات میں سرفہرست ہے کیونکہ یہ بلوچستان میں رہنے والے عوام جو دہائیوں سے اس غیرقانونی کام میں مصروف ہیں، پر اثرانداز ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ اسی وجہ سے سرحدی بازاروں کے قیام کی منصوبہ بندی کی گئی تا کہ اس طریقے سے سرحدوں میں تجارت کی موثر اور تعمیری نگرانی کرسکیں گے۔

عمران خان نے سرحدی بازاروں کے افتتاح کو ایران اور پاکستان کے عوام بالخصوص سرحدی علاقوں میں رہنے والوں کے مفاد میں قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد اس منصوبے کے جلد از جلد نفاذ پر مزید توجہ سے اقدامات اٹھایا جا رہا ہے اور اگلے چند مہینوں میں مشترکہ سرحدی بازاروں کا افتتاح کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ سرحدی علاقوں میں رہنے والے لوگ، زیادہ تر اسی منصوبے سے مستفید ہوں گے اور ان کو قانونی تجارتی سرگرمیوں میں دلچسبی ہوگی۔

پاکستانی وزیر اعظم نے ایندھن کی اسمگلنگ کی روک تھام اور نگرانی پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اگر اس مسئلے کا انتظام کرلیں اور اس کے لئے ٹولس طے کرلیں تو پاکستان کے قومی خزانے میں 180 ارب روپے کی بچت ہوگی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستانی وزیر خارجہ کے حالیہ دورے ایران کے موقع پر پاک- ایران تیسری باضابطہ سرحد "پیشین-مند" کا باضابطہ افتتاح کیا گیا۔

 نیز اس حوالے سے خاتون پاکستانی وزیر برائے دفاعی پیداوار "زبیدہ جلال" نے پاکستانی صوبے بلوچستان کے علاقے "مند" اور ایرانی صوبے سیستان اور بلوچستان کے علاقے  "پیشین" کے درمیان باضابطہ سرحد کے افتتاح کو ایک عظیم اور تاریخی اقدام قرار دے دیا جس سے دونوں ملکوں کے مفادات کی فراہمی ہوگی۔

انہوں نے حالیہ مہینوں میں علاقے "ریمدان- گنبد" میں پاک- ایران کی دوسری باضابطہ سرحد کی افتتاحی تقریب میں حصہ لینے سمیت بنیادی ڈھانچوں کی توسیع اور سرحدی بازاروں کے قیام پر اگلے قدموں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ تہران اور اسلام آباد، باہمی تعلقات کی تقویت کے راستے پر گامزن ہیں۔

پاکستانی وزیر نے کہا کہ مشترکہ سرحدوں میں حالیہ تبدیلیوں سے باہمی تعلقات کی مضبوطی و نیز سرحدی علاقوں میں رہنے والوں کی صورتحال میں بہتری آنے کا پختہ عزم ظاہر ہوتا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha