ویانا مذاکرات سے متعلق کوئی بھی فیصلہ اعلی حکام کی ذمہ داری ہے

تہران، ارنا – ایرانی حکومت کے ترجمان نے کہا کہ ویانا مذاکرات سے متعلق کوئی بھی فیصلہ اور پالیسی سازی اعلی عہدیداروں کی ذمہ داری ہے اور ہمیں امید ہے کہ فریقین ایران اور آئی اے ای اے کے مابین معاہدے کی آخری تاریخ سے پہلے جوہری معاہدے کی بحالی کے مذاکرات کے لئے بات چیت مکمل کریں گے۔

 یہ بات علی ربیعی نے آج بروز منگل ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ ویانا مذاکرات سے متعلق کوئی بھی فیصلہ اور پالیسی سازی اعلی عہدیداروں کی ذمہ داری ہے اور ہمیں امید ہے کہ فریقین ایران اور آئی اے ای اے کے مابین معاہدے کی آخری تاریخ سے پہلے جوہری معاہدے کی بحالی کے مذاکرات کے لئے بات چیت مکمل کریں گے۔

ربیعی نے افغانستان میں اسکول کی طالبات کو قتل کرنے میں داعش کے جرم کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی حکومت اور عوام اس سوگ میں اسلامی جمہوریہ افغانستان کے عوام اور حکومت کے ساتھ کھڑے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ان جرائم کے سامنے خاموش نہیں رہ سکتا ہے اور آج صہیونیت یا داعش کی تشدد اور دہشت گردی کے روکنے کا بہترین طریقہ علاقائی تعاون کو تقویت دینا ہے۔

انہوں نے ایران اور سعودی عرب  کے مذاکرات کو مثبت قرار دیتے ہوئے کہا کہ حکومت میں خصوصی نمائندوں کی سطح پر بات چیت کی گئی ہے اور یہ مذاکرات کسی نتیجے تک پہنچنے تک جاری رہیں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha