آزادی، خودمختاری اور دیر پا سلامتی شہدا کی قربانیوں کا نتیجہ ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا- ایرانی صدر مملکت نے آج بروز پیر کو شہدا، جانبازوں اور غازیوں کے اہل خانوں سے ایک ملاقات کے دوران، شہدا اور ان کے لواحقین کو ملک کے روحانی سرمایہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان سے ملاقات سے ہمارا عوام کی خدمت پر عزم دوگنا ہوگا۔

اس موقع پر ڈاکٹر "حسن روحانی" نے جوہری معاہدے کی بحالی پر ویانا مذاکرات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم اپنے قومی مفادات اور حق کے حصول کیلئے عالمی طاقتوں سے مذاکرات کر رہے ہیں اور جس طرح کسی کو جنگ کے محاذوں پر لڑنے والوں کے جذبے کو مجروح کرنے کا حق نہیں ہے اس طرح بھی کسی کو سفارتی محاذ میں جد و جہد کرنے والوں کے جذبے اور عزم کو مجروح کرنے کی اجازت نہیں ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ سازشوں، ظالمانہ پابندیوں اور معاشی جنگ کیخلاف ایرانی عوام کی مزاحمت سے پوری دنیا بالخصوص امریکہ کو پتہ چل گیا کہ ایران کیخلاف زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی پالیسی کو شکست کا سامنا ہوا ہے اور اب ان کیلئے قانون پر واپسی، وعدوں پر عمل درآمد، پابندیوں کی منسوخی اور جوہری معاہدے کے بھر پور نفاذ کے سوا کوئی راستہ نہیں ہے۔

ایرانی صدر مملکت نے کہا کہ اگر ملک دشمن عناصر بالخصوص امریکیوں کو ایرانی قوم کی قربانیوں کے جذبے کا ادراک حاصل تھا تو وہ کبھی اسلامی جمہوریہ ایران کی دہمکی نہیں دیتی تھی۔

انہوں نے کہا کہ اس لئے ہمیں اپنے اصولوں، اقدار اور معیار کو برقرار رکھتے ہوئے دنیا کی رائے عامہ پر اثر انداز ہونا ہوگا اور یہ مقصد سیاسی تنہائی کے ذریعے نہیں؛ بلکہ دنیا کیساتھ بات چیت اور تعاون سے حاصل کیا جاسکے گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha