ایران فلسطینی عوام کی بھر پور حمایت کرے گا: امیر عبداللہیان

قم، ارنا - ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر کے سینئر مشیر برائے بین الاقوامی امور نے کہا ہے کہ آج اسرائیل مردہ انجام تک پہنچ چکا ہے اور اسلامی جمہوریہ ایران فخر کے ساتھ اعلان کرتا ہے کہ وہ پوری طاقت کے ساتھ مزاحمتی فرنٹ اور فلسطینی عوام کی حمایت کرے گا۔

یہ بات حسین امیر عبداللہیان نے منگل کے روز قم میں القدس کی بین الاقوامی کانگریس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ اس دن کا نام دینا امام خمینی کا ایک بہت بڑا اقدام تھا جس تاریخی مسئلہ کی بحالی اور فلسطین کے عظیم زخم کی بحالی کیلیے تھا۔

انہوں نے بتایا کہ یوم القدس فلسطین کے مظلوم عوام کی حمایت کیلیے عالم اسلام اور دنیا کے تمام باشعور اور بیدار ضمیر کے اتحاد کا دن ہے۔

امیر عبداللہیان نے مزید کہاکہ عالمی یوم القدس اس سال اس صورتحال میں منایا جارہا ہے جہاں عرب ممالک کے کچھ حکمرانوں بشمول متحدہ عرب امارات اور بحرین کے حکام نے گذشتہ سال وائٹ ​​ہاؤس اور امریکہ کے دباؤ پر صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے کیلیے ایک معاہدے پر دستخط کیے۔

انہوں نے بتایا کہ یہ بہت بدقسمتی کی بات ہے کہ عرب ممالک کے ان حکمرانوں میں سے کچھ جو گذشتہ عشروں میں فلسطین کے مظلوم عوام کی حمایت اور مزاحمت میں کوئی کردار نہیں تھے، آج فلسطین کے مظلوم عوام کے حقوق کے حصول کی بجائے ان نہتے لوگ کے خلاف کھڑے ہیں۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ القدس کی دوسری بین الاقوامی کانگریس کا 4 اور 5 مئی کو شہر قم میں جاری ہوگی جس میں ایران ، فلسطین ، ملائیشیا ، ہندوستان ، افغانستان ، پاکستان ، فرانس ، ارجنٹائن ، عراق ، ترکی ، چلی ، متحدہ عرب امارات ، لبنان ، شام ، برطانیہ ، کینیڈا اور تیونس کے 30 سائنسی اور ثقافتی شخصیات تقریر کریں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 6 =