ایران میں مذہبی اقلیتوں کے مابین قربت دوسرے ممالک کیلئے ایک نمونہ ہے

تبریز، ارنا- آذربائیجان کی آرمینیائی برادری کے خلیفہ نے کہا کہ ایران میں مذاہب کے تنوع کے باوجود مذہبی اقلیتوں کے مابین قربت؛ دوسرے ممالک کیلئے ایک نمونہ ہے۔

ان خیالات کا اظہار آرچ بشپ "گریگور" نے بدھ کے روز صوبے مشرقی آذربائیجان کے ثقافتی ادارے کے سربراہ سے ایک ملاقات کے دوران، گفتگو کرتے ہوئے کی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران ایک ایسا ملک ہے جہاں مذاہب کا ایک بہت بڑا تنوع موجود ہے اور مذہبی اقلیتوں کے مابین تفہیم اور گہری زندگی قائم ہے۔ لہذا، ہمیں خوشی ہے کہ اس ملک میں آرمینی باشندے، دوسرے مذہبی بھائیوں کیساتھ ، امن اور سلامتی کے ساتھ رہتے ہیں۔

گریکور نے آرٹ اور ثقافت کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے ثقافتی ادارے کے اہم کردار پر زور دیا۔

انہوں نے چرچس آف مشرقی آذربائیجان کی کتاب کی اشاعت کا ذکر کرتے ہوئےاس کتاب کی دوسری جلد کی اشاعت کا اعلان کیا اور اس کتاب کو آرمینیائی تاریخی اور ثقافتی مقامات کا تعارف کروانے میں کارآمد سمجھا۔

اس موقع پر مشرقی آذربائجیان کے ثقافتی ادارے کے سربراہ نے کہا کہ دین اسلام میں، دوسرے مذاہب کا احترام کرنے پر بہت زور دیا جاتا ہے، اور ایرانی معاشرے میں الہی مذاہب ایک دوسرے کیساتھ کھڑے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور آئین میں ، دوسرے مذاہب کے پیروکاروں کی آزادی اور آزادی کے احترام پر ہمیشہ زور دیا گیا ہے اور یہ رویہ عملی رویہ بن گیا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =