ایران میں پولیمر اور پلاسٹک مصنوعات کی 5۔1 ارب ڈالر کی برآمدات

تہران، ارنا- پلاسٹک انڈسٹری کے معاشی آؤٹ لک سے متعلق دوسری نیشنل کانفرنس کے سکریٹری نے ملک میں سالانہ 5 ملین ٹن پولیمر اور پلاسٹک مصنوعات کی تیاری پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ان مصنوعات کی برآمدات کی مالی شرح 5۔1 ارب ڈالر ہے۔

ان خیالات کا اظہار"برمک قنبرپور" نے آج بروز منگل کو منعقدہ ایک اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا حالیہ سالوں کے دوران، ایران کیخلاف معاشی جنگ اور پابندیوں کی وجہ سے رونما ہونے والی بُری معاشی صورتحال سے ملک کی ترقی میں اقتصاد کے کردار کی اہمیت ظاہر ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران کی پولیمر انڈسٹری میں سب سے زیادہ مسابقتی فائدہ ہے، لہذا ہم جتنا زیادہ خود کو خام فروخت سے دور رکھیں گے اور زیادہ ویلیو ایڈڈ مصنوعات برآمد کریں گے، اتنا ہی ترقی میں مددکرسکیں گے۔

قنبرپور کا کہنا ہے کہ پلاسٹک اور پولیمر انڈسٹری نے دیگر صنعتوں کے مقابلے میں سب سے زیادہ روزگار کے مواقع کی فراہمی کی ہے اور اس میں 750 ہزار افراد سرگرم عمل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزارت صنعت کے قیام اور آپریشنل لائسنسوں سے یہ بات واضح ہوجاتی ہے کہ ایرانی پولیمر کی پیداواری گنجائش 20 ملین ٹن سے زیادہ ہے جبکہ ملک میں اس مصنوع کی سالانہ 5 ٹن کی تیاری کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔

قنبرپور نے کہا موجودہ صلاحیتوں اور بنیادی ڈھانچوں کے پیش نظر اس صنعت میں 5۔1 ارب ڈالر برآمدات قابل قبول نہیں ہے اور ہم رکاوٹوں کو دور کرنے سے بہت ہی کم عرصے میں پیداواری صلاحیت کو 3 گنی کرکے سالانہ 5۔4 ارب ڈالر پلاسٹک اور پولیمر مصنوعات کو برآمد کرسکتے ہیں۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ پلاسٹک انڈسٹری کے معاشی آؤٹ لک سے متعلق دوسری نیشنل کانفرنس 18 اور 18 مئی تک آن لائن انعقاد ہوگا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha