ایران پاکستان کے تجارتی تعلقات کی ترقی کیلیے مشترکہ کمیشن کی سرگرمی کو بحال کرنا لازمی ہے

اسلام آباد، ارنا - فیڈریشن آف پاکستان چیمبر ز آف کامرس اینڈ انڈسٹر ی کے صدر نےایران کے ساتھ سرحدی گزرگاہوں میں اضافے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستانی تاجروں کا مطالبہ دونوں ممالک کے مشترکہ اقتصادی کمیشن کو بحال کرنا ہے جس کو سرحدی گزرگاہوں کو فروغ دینا لازمی ہے۔

یہ بات انجم نثار نے اتوار کے روز ارنا کے نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے بتایا کہ پاکستانی کاروباری برادری خاص طور سرگرم معاشی کارکن ایران کے ساتھ سرحدی علاقوں میں دونوں ممالک کے مابین تیسری سرکاری بارڈر کراسنگ کے کھولنے پر بہت خوش ہیں۔

پاکستانی عہدیدار نے بتایا کہ ہمیں ایران اور پاکستان کے مابین سرحدی گزرگاہوں میں اضافے کے فوائد سے لطف اندوز ہونے کی ضرورت ہے البتہ اس کے لئے دونوں ممالک کے مشترکہ اقتصادی کمیشن کی سرگرمیون کو دوبارہ شروع کرنا ضروری ہے۔

پاکستانی عہدیدار ایران کے ساتھ مشترکہ اقتصادی کمیشن کے انعقاد کیلیے پاکستانی تاجروں کا مطالبہ کا ذکر کرتا ہے جبکہ ایرانی وزیر سڑک اور شہری ترقی نے پیشین- مند بارڈر کراسنگ کے افتتاح کے موقع پر اعلان کیاکہ اگلے تین ماہ میں اسلامی جمہوریہ ایران پاکستان کے ساتھ مشترکہ کمیشن اجلاس کا نیا دور(21 ویں) منعقد کرنے کے لئے تیار ہے۔

انجم نثار نے ایران اور پاکستان کے ذریعہ ماضی میں ہونے والے معاہدوں پر عمل درآمد پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم دونوں ممالک کے درمیان تجارت کے حجم کو سالانہ 5 بلین ڈالر کے حصول کے لئے کوشاں ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =