تہران کا علاقائی کشیدگی  سے نمٹنے میں عراق کے ثالثی کردار ادا کرنے کا خیر مقدم

بغداد،ارنا۔ عراق میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک، تہران اور بعض علاقائی ملکوں کے درمیان کشیدگی میں کمی لانے میں عراق کے ثالثی کردار کا خیر مقدم کرتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "ایرج مسجدی" نے آج بروز منگل کو ارنا نمائندے کیساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ حالیہ بین الاقوامی اور علاقائی صورتحال نے، ایران اور بعض ملکوں کے درمیان تعلقات میں کشیدگی اور تصفیہ طلب مسائل کے حل پر مناسب فضا کی فراہمی کی ہے۔

مسجدی نے عراق میں امریکی فوجیوں کی موجودگی سے متعلق کہا کہ اس ملک میں امریکی فوجیوں کی موجودگی علاقے اور عراق کے مفاد میں نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ عراق اور علاقے کے مسلح افواج خود ہی خطے میں قیام امن برقرار رکھنے کی پوری صلاحیت رکھتی ہیں۔

ایرانی سفیر نے جنرل شہید "سلیمانی" اور "ابو مہدی المہندس" کے قتل کیس کے قانونی تعاقب سے متعلق کہا کہ اس کیس کا دونوں ملکوں کے ذریعے اور تین قانونی، سیاسی اور بین الاقوامی پہلوؤں میں تعاقب کیا جاتا ہے۔

مسجدی نے تہران اور بغداد کے درمیان مختلف شعبوں میں بڑھتے ہوئے تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران سے عراق میں گیس اور بجلی کی برآمد کا سلسلہ جاری رہے گا اور توقع کی جاتی ہے کہ عراقی فریق اپنے قرضوں کی ادائیگی میں بہتر عمل کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ عراق میں دو ایرانی جامعات (آزاد اسلامی یونیورسٹی اور میڈیکل سائنس یونیورسٹی) کے ذیلی شعبوں کے قیام پر اتفاق کیا گیا ہے۔

ایرانی سفیر نے کہا کہ سینما، سائنسی اور ثقافتی شعبوں میں باہمی نمائشوں کے انعقاد پر تعمیری مذاکرت کیے گئے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha