جوہری تنصیبات کو جان بوجھ کر نشانہ بنانا جنگی جرم ہے

تہران، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے نطنز کی تنصیبات میں ایٹمی دہشت گردی اور تخریب کاری کے بارے میں کہا کہ جوہری تنصیبات کو جان بوجھ کر نشانہ بنانا جنگی جرم ہے۔

یہ بات محمد جواد ظریف نے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل ' "انٹونیو گوٹرش" کے نام میں ایک خط میں کہی۔

انہوں نے کہا کہ سیف گارڈ کے فریم ورک کے اندر جوہری تنصیبات میں سے ایک کو جان بوجھ کر نشانہ بنانا _ جو تابکار مادے کے ربہت رساو کا خطرہ ہے_ جنگی جرم ہے۔

انہوں نے مزید کہاکہ اسرائیل نے امریکی انتخابات کے بعد جوہری معاہدے کی بحالی کو روکنے کے لئے عملی اقدامات اٹھانے کی دہمکی دی تھی جائیں اور اب ایسا کیا۔

ظریف نے مزید کہا کہ اگر امریکہ اس احمق جوا کے سنگین نتائج کو روکنا چاہتا ہے تو اسے ٹرمپ کی معاشی دہشت گردی یا حالیہ جوہری دہشت گردی کو روکنا اور تمام پابندیوں کو منسوخ کرنا ہوگا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی جوہری ادارے کے ترجمان "بہروزکمالوندی" نے 11 اپریل کو کہا کہ نطنز کمپلیکس میں واقع یورینیم کو افزودہ کرنے کے پلانٹ کے بجلی سرکٹ کے ایک حصے میں حادثہ پیش آیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ حادثے کے نتیجے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا اور نہ ہی آلودگی پھیلی گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ حادثے کی وجوہات کا تعین کرنے کے لیے تحقیقات شروع کر دی گئی ہے اور اس حوالے مزید تفصیلات بعد میں جاری کی جائیں گی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha